میٹرو بس لاکھوں لوگوں کا اثاثہ ، سفر کرنے والوں کے لیے بری خبر

پنجاب حکومت نے عوام کے لئے میٹرو بس کے کرایوں میں اضافے کا حکم جاری کر دیا، گجومتہ سے شاہدرہ سفر کرنے پر اسٹاپ تو اسٹاپ کرائے مقرر کیے جائیں گے۔۔

میٹروبس دنیا بھر میں آمد و رفت کے لئے سب سے موئثر ،تیز رفتار، محفوظ، آرام دہ ذریعے کے طور پر انتہائی مقبول ہے۔۔چونکہ یہ عام عوام جن کو روزانہ اپنی Work places اور Jobs پر جانا ہوتا ہے اور اپنے زندگی کے باقی روز مرہ اخراجات کو مشکل سے پورا کر پاتے ہیں تو اس صورت میں ان کے لئے دوردراز جگہوں کے سفر کو مہنگی ٹرانسپورٹ پر طہ کرنا مشکل کا باعث ہوتا ہے۔۔

ترقی یافتہ ممالک کے کروڑوں افراد ٹرانسپورٹ کی اس ADVANCED TECHNOLOGY سے بھرپور طور پر استفادہ کر رہے ہیں اور اس کی بہترین سفری خدمات کی بناء پر اسے آمدورفت کامثالی اور کامیاب ترین ذریعہ قرار دے چکے ہیں۔۔

دنیا میں TRANSIT RAPID SYSTEM کا آغاز 1974ء میں برازیل میں ہوا تھا اور اس کی کامیابی اور لوگوں کے لئے مفید ثابت ہوتےکو دیکھتے ہوئے یہ دنیا بھر میں پھیلتا چلا گیا۔۔ پبلک ٹرانسپورٹ کا جدید نظام آج شمالی کویا، احمد آباد، جکارتہ ، کولمبیا، استنبول ترکی اور لانس اینجلس جیسے شہروں اور ملکوں میں انتہائی کامیاب نتائج کے ساتھ کار فرما ہے۔۔۔

پاکستان کی عوام کو بھی معیاری ، باقاعدہ اور آرام دہ ٹرانسپورٹ کی فراہمی ہمیشہ سے ایک مسئلہ رہا ہے۔۔بڑھتی ہوئی آبادی کی وجہ سے Metropolitan لاہور میں ٹریفک کے مسائل میں بھی بے پناہ اضافہ ہوا ہے جن کو حل کرنے کے لئے مختلف ادوار میں متعدد تجاویز پیش کی گئی۔۔ سابق وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے شہروں کو جدید اور بین الاقوامی معیار کی سفری سہولیات کی فراہمی کے METRO BUS کا پروجیکٹ تشکیل دیا۔۔۔

لاہور میٹرو بس نظام پاکستان کے شہر لاہور میں تیز نقل و حمل کا ایک نظام ہے۔۔میٹرو بس روٹ 27 کلومیٹر طویل سڑک پر مشتمل ہے، جو گجومتہ سے شاہدرہ تک ہے۔ اس سے 27 کلومیٹر کا سفر ایک گھنٹے میں سمٹ آیا ہے۔۔ اس پر 27 بس اسٹیشن ہیں اور اس منصوبے کی لاگت تقریبا 25 بلین پاکستانی روپیہ ہے۔ پنجاب کے سابق وزیر اعلی شہباز شریف نے چنگی امر سدھو سے گجومتہ تک بس کو چلایا۔ یہ 115 بسوں کا ایک نظام ہے اور ہر بس میں 150 مسافروں کی گنجائش ہے۔۔۔

لیکن حال ہی میں تفصیلات کے مطابق لاہور کی عوام کیلئے بری خبر یہ ہے کہ میٹرو بس سروس کا روٹ انتظامیہ کی جانب سے محدود کر دیا گیا۔۔ میٹروبس گجومتہ سے ایم اےاو کالج تک محدود کی گئی۔۔ ایم اے او کالج سے شاہدرہ تک روٹ کو عارضی طور پر معطل کیا گیا ہے۔۔۔

پنجاب حکومت نے میٹرو بس کے کرایوں میں اضافے کا فیصلہ کیا جو کہ یہاں کے لوگوں کے لئے باعث فکر بات ہے۔۔۔ باغی ٹی وی کے مطابق پنجاب حکومت نے میٹرو بس میں سفر کرنے والوں کو بری خبر سناتے ہوئے اس کے کرایوں میں اضافے کا عندیہ دے دیا۔وزیر خزانہ پنجاب ہاشم جواں بخت کا کہنا ہے کہ لازمی نہیں ایک ہی ٹکٹ پر گجومتہ سے شاہدرہ کا سفر کیا جا سکے۔اب سے ہر اسٹاپ پر کرائے مقرر کیے جائیں گے۔۔۔۔

میٹرو بس پر سالانہ 12ارب روپے کی سبسڈی دے رہے ہیں۔عوام پر اتنا ہی بوجھ ڈالیں گے جتنا وہ برداشت کر سکیں۔میٹرو بس کو دی جانے والی سبسڈی خزانے پر بوجھ ہے، کرائے RATIONALIZE کرنے سے حکومتی سبسڈی میں کمی آئے گی۔. میڈیا رپورٹس میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ پنجاب حکومت نے لاہور میں سیاحت کے لیے چلائی جانے والی گاڑیوں کے کرایے میں اضافے کا فیصلہ کر لیا ہے۔۔۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.