Cloud Front
pak high commission

کشمیر مسئلے پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹیں گے، عبد الباسط

بھارت سے مذاکرات بنیادی ایشوز سے مشروط،کشمیر مسئلے پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹیں گے، عبد الباسط
الزام تراشیوں اور جنگی جنون سے خطے کے امن ، خوشحالی ، ترقی اور باہمی روابط پر برے اثرات مرتب ہوں گے جو کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں،پاکستانی ہائی کمشنر

نئی دہلی: بھارت میں پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کا کہنا ہے کہ پاکستان بھارت کے ساتھ تمام تصفیہ طلب مسائل بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتا ہے تاہم مذاکراتی عمل بنیادی ایشوز سے مشروط ہیں اور کشمیر مسئلے پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹیں گے ۔ پیر کے روز بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں نجی ٹی وی سے گفتگو میں پاکستانی ہائی کمشنر نے کہا کہ پاک بھارت تصفیہ طلب مسائل کو مذاکرات کے ذریعے ہی حل کیا جا سکتا ہے لیکن امرتسر میں ہارٹ آف ایشیاء کانفرنس کے موقع پر جو کچھ ہوا بھارت کو اس پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہئے ۔

ایک روز قبل بھارت کے شہر امرتسر میں افغانستان کی صورت حال کے تناظر میں منعقدہ ہارف آف ایشیاء کانفرنس میں افغان صدر اشرف غنی اور بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے دہشتگرد تنظیموں کے حوالے سے پاکستان پر تنقید کی جبکہ بھارتی میڈیا نے بھی دہشتگردی کے مسئلے کو اچھالا ۔ پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے کہا کہ کانفرنس میں شرکت کر کے دنیا کو باور کرایا ہے کہ ہم مذاکرات چاہتے ہیں لیکن بھارت گریزاں ہے ۔تاہم امن کے حوالے سے گیند اب بھارت کے کورٹ میں ہے ۔ پاکستانی ہائی کمشنر نے مزید کہا کہ مذاکراتی عمل کے لئے سیاسی طرز عمل لازمی ہوتا ہے اور مذاکرات کے لئے بھارت کو سیاسی طرز عمل ہی اپنانا چاہئے ۔ خطے کے بہتر مستقبل کا دارو مدار ہی امن مذاکرات پر ہے،پاکستان کے بھارت کے ساتھ مذاکرات بنیادی ایشوز سے مشروط ہیں،دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری اور خطے میں قیام امن کیلئے بنیادی مسائل حل ہونے ضروری ہے ،مسئلہ کشمیر دونوں ممالک کے درمیان بنیادی ایشو ہے ، پاکستان مسئلہ کشمیر کے ایشو پر ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹے گا ،مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوم متحدہ کی قرار داد ہے جو دونوں ممالک کو قابل قبول ہونا چاہیے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ الزام تراشیوں اور جنگی جنون سے خطے کے امن ، خوشحالی ، ترقی اور باہمی روابط پر برے اثرات مرتب ہوں گے جو کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں ۔