Cloud Front
CDA

سی ڈی اے سفید ہاتھی !

قومی اسمبلی میں سی ڈی اے آرڈیننس 1960ایکٹ میں ترمیمی بل جمع
سی ڈی اے سفید ہاتھی بن چکا ،معصوم عوام کی زمینوں پر قابض ہوتا جا رہا ہے،اسد عمر

اسلام آباد: تحریک انصاف کے مرکزی و سینئر رہنما اسد عمر نے قومی اسمبلی میں سی ڈی اے آرڈیننس 1960ایکٹ میں ترمیمی بل جمع کرا دیا جس کا مقصد سی ڈی اے کا اسلام آباد کے شہریوں کی زمینوں کا ناجائز حصول روکنا ہے۔ اس موقع پر اسد عمر کا کہنا تھا کہ سی ڈی اے سفید ہاتھی بن چکا ہے اور اپنی مرضی سے معصوم عوام کی زمینوں پر قابض ہوتا جا رہا ہے۔ یہ زمین انکے مالکان سے زبردستی لے کر ڈیولپمنٹ کے نام پر سیکٹرز کی تعمیر کر کے اربوں کمائے جاتے ہیں۔

سی ڈی اے ان زمینوں کے مالکان کو جائز معاوضہ بھی ادا نہیں کرتا حتی کہ کئی سالوں سے لوگوں کی زمینوں کے واجبات تاحال ادا نہیں کیے گئے۔ اس سے پہلے دارالحکومت اسلام آباد کو تعمیر کرنے کے لیے 1960 میں سی ڈی اے آرڈینینس پاس کیا گیا جس کے تحت سی ڈی اے اپنی مرضی سے زمین حاصل کر کے پارلیمنٹ ہاوس، تمام سرکاری دفاتر اور سیکٹرز بنا چکی لہذہ اب اس آرڈینینس کی ضرورت نہیں۔ دریں اثنا اسد عمر کا کہنا تھا کہ ریاست کے عوام کو اپنی مرضی سے جینے کا حق حاصل ہے لہذہ دارالحکومت میں رہنے والے تمام لوگوں کو اپنی مرضی سے اپنی زمینوں کے فیصلے کرنے کا اختیار ہونا چاہیے اور تمام متاثرین کے دہایؤں کے واجبات جلد از جد ادا کیے جا ئیں۔