Cloud Front
Siraj Ul Haq

جماعت اسلامی نے پانامہ لیکس کی تحقیقات کیلئے ایک بار پھر کمیشن بنانے کا مطالبہ کر دیا

وقت آ گیا ہے کہ سیاست کو کرپشن سے پاک کر لیں،امیر جماعت اسلامی سراج الحق

اسلام آباد : امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس کی تحقیقات اور کرپٹ لوگوں کے احتساب کے لئے ایک بار پھر کمیشن بنانے کا مطالبہ کر دیا اور تجویز دی ہے کہ 25دن میں انکوائری ٹرائل اور کمیشن کا کام مکمل ہونا چاہیئے۔ منگل کے روز سپریم کورٹ کے باہر امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 2017ء میں پانامہ کا کیس نہیں ہونا چاہیئے ۔ چاہتے ہیں دسمبر میں ہی مکمل ہو جائے۔ حکومت کمیشن بنانے سے خوفزدہ تھی اب یہ سپریم کورٹ کو کرنا چاہیئے۔

ساری جماعتوں کا موقف ہے کہ کمیشن بنایا جائے اور ہم نے تجویز دی ہے کہ 25دن میں انکو بڑی ٹرائل اور کمیشن کا کام مکمل کر لیا جائے اور کمیشن 25دن میں کارروائی مکمل کر سکتا ہے۔ پورا ملک کرپشن کی دلدل میں پھنسا ہوا ہے۔ ہمارا موقف اب بھی یہی ہے کہ کمیشن بنایا جائے۔ وقت آ گیا ہے کہ سیاست کو کرپشن سے پاک کر لیں ۔ اگر سیاست دان خود کرپشن میں ملوث ہیں تو احتساب کون کرے گا۔ ٹریفک کے سپاہی کے بجائے وزیراعظم کے احتساب سے سیاست کرپشن سے پاک ہو سکتی ہے۔ جماعت اسلامی نے کرپشن کے خاتمے سے متعلق بل پیش کئے تھے۔ جماعت اسلامی کے پیش کردہ4بل حکومت نے سرد خانے میں ڈال دیئے۔ حکومت نے کرپشن کے خاتمے کے لئے کوئی بل پیش نہیں کیا۔ حکومت تاخیری حربے استعمال کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فوجی عدالتیں سول عدالتوں پر عدم اعتماد کا اظہار ہیں۔ مخصوص وقت کے لئے فوجی عدالتوں کو قبول کیا جا سکتا ہے مگر مستقل نہیں۔