Cloud Front
Ex Indiuan Air Chief

بھارتی فضائیہ کے سابق سربراہ کرپشن کے الزام میں گرفتار

چوپرہیلی کاپٹروں کے معاہدے میں فضائیہ کے سابق سربراہ نے اپنے کزن کے ذریعے پیسے وصول کئے،سی بی آئی

نئی دلی: بھارتی تحقیقاتی ادارے ( سی بی آئی) نے فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی کو چوپر ہیلی کاپٹروں کے معاہدے میں کرپشن کے الزام پر 2 ساتھیوں سمیت گرفتار کرلیا۔بھارتی میڈیا کے مطابق سی بی آئی نے 05۔2004 میں برطانیہ کی کمپنی کے ساتھ 12 آگسٹاویسٹ لینڈ چوپر طیاروں کے معاہدے میں مبینہ طور پر 3 ہزار600 کروڑ روپے کی کرپشن کی جس کے الزام میں فضائیہ کے سابق سربراہ ایس پی تیاگی، وکیل گوتم گھاتان اور سنجیو تیاگی کو گرفتار کرلیا۔

سی بی آئی کا کہنا ہے کہ تینوں ملزمان کو کرپشن الزامات اور ملکی خزانے کو نقصان پہنچانے کے لئے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے کے الزامات پر گرفتار کیا گیا۔بھارتی میڈیا کا ذرائع کے حوالے سے کہنا ہے کہ چوپرہیلی کاپٹروں کے معاہدے میں فضائیہ کے سابق سربراہ نے اپنے کزن کے ذریعے پیسے وصول کئے جس نے معاہدے میں مڈل مین کا کردار ادا کیا جب کہ سی بی آئی نے ایس پی تیاگی کے بینک اکاؤنٹس اورعمارتی کاموں میں کی جانے والی سرمایہ کاری کا بھی سراغ لگایا اور اسی کے ساتھ مختلف ممالک کو خطوط بھی لکھے جاچکے ہیں کہ وہ اس مقدمے کے حوالے سے شواہد دینے میں معاونت کریں۔واضح رہے کہ انفورسمینٹ ڈائریکٹوریٹ نے 2014 میں ہیلی کاپٹروں کی خریداری میں کرپشن کا مقدمہ درج کرایا تھا جس میں ایئرچیف ایس پی تیاگی سمیت 21 افراد کو نامزد کیا گیا تھا جب کہ انفورسمینٹ ڈائریکٹوریٹ 70 ملین یورو کی کرپشن کی تحقیقات کر رہا ہے۔