Cloud Front
kashmir

مقبوضہ کشمیر:بھارتی فوجیوں نے 1989 سے اب تک 94,594 کشمیریوں کو شہید کیا

اقوام متحدہ مقبوضہ علاقے میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لے، حریت رہنما

سرینگر: انسانی حقوق کا عالمی دن 10دسمبر کو منایا گیا ایسے میں مقبوضہ کشمیر ایک ایسا خطہ ہے جہاں قابض بھارتی فورسز نے جنوری 1989سے اب تک 94,594بے گناہ کشمیریوں کو اپنا پیدائشی حق، حق خود ارادیت مانگنے کی پاداش میں شہید کیا ہے جن میں سے 7,076کو دوران حراست شہیدکیا گیا میڈیا سروس کے ریسرچ سیکشن کی جانب سے انسانی حقوق کے عالمی دن کے موقع پر جاری ہونے والی رپورٹ کے مطابق قتل کے ان واقعات سے 22,831خواتین بیوہ اور107,603بچے یتیم ہوگئے۔رپورٹ کے مطابق اس عرصے کے دوران فوجیوں نے 10,816خواتین کی بے حرمتی کی جبکہ 107,725 رہائشی عمارتوں اور دیگر املاک کو تباہ کیا۔

رپورٹ کے مطابق ان 27برسوں کے دوران بھارتی پولیس اور فوجیوں نے 8ہزار سے زائد افراد کو حراست کے دوران لاپتہ کیا۔رپورٹ میں کہا گیا کہ بھارتی پولیس نے صرف رواں برس کے دوران حریت رہنماؤں مسرت عالم بٹ، آسیہ اندرابی،فہمیدہ صوفی، نور محمد کلوال، محمد ایاز اکبر، میرحفیظ اللہ، مولانا برکاتی، محمد یوسف شیخ، رئیس احمد میر اور سلمان یوسف سمیت11ہزار سے زائد نوجوانوں اور طلباء کو گرفتار کیاگیاان میں سے بہت سے کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت مختلف جیلوں میں نظربند ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہکٹھ پتلی انتظامیہ نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سیدعلی گیلانی اور جنرل سیکرٹری شبیر احمد شاہ کو رواں برس مسلسل گھروں اور تھاوں میں نظر بند رکھا اور انہیں جمعہ کی نماز بھی نہیں پڑھے دی گئی۔ میر واعظ عمر فاروق ، ، محمد یاسین ملک ، آغا سید حسن الموسوی الصفوی، ظفر اکبر بٹ، بلال صدیقی،مختار احمد وازہ اور دیگر حریت رہنماؤں کو بھی رواں برس کے زیادہ تر دنوں میں گھروں، تھانوں اور جیلوں میں نظر بند رکھا گیا اور انہیں سیاسی سرگرمیاں جاری نہیں رکھنے دی گئیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ رواں برس 8 جولائی کو بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں ممتاز نوجوان رہنما برہان مظفر وانی کے ماورائے عدالت قتل کے بعد بھارتی فورسز کی طرف سے پر امن مظاہرین پر گولیوں ، پیلٹ بندوق اور آنسو گیس کے بے دریغ استعمال سے اب تک 115افراد شہید جبکہ 16 ہزار کے لگ بھگ زخمی ہو چکے ہیں۔ پیلٹ چھرے لگنے سے 1250افراد کی بینائی متاثر ہوئی جس میں متعدد خواتین بھی شامل ہیں۔دریں اثنا سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق، محمد یاسین ملک، شبیر احمد شاہ اور دیگر حریت رہنماؤں نے سرینگر میں جاری اپنے بیانات میں اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے اپیل کی ہے کہ وہ بھارتی فورسز کی طرف سے مقبوضہ علاقے میں جاری انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا نوٹس لیں اور تنازعہ کشمیر کے حل کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالیں۔