Cloud Front

عمران خان ، جہانگیر ترین نااہلی ریفرنسز کی سماعت 26، کیپٹن صفدر کی 19 دسمبر تک ملتوی

الیکشن کمیشن میں سماعت کے دوران مسلم لیگ ن کی جانب سے وکیل کی تبدیلی اور سماعت ملتوی کرنے کی درخواست، پی ٹی آئی وکیل نعیم بخاری نے ریفرنسز کی سماعت کے موقع پر دلائل کیلئے تیار اور کسی بھی تاریخ پر حاضر ہونے کی پیش کش کر دی
عمران خان اور جہانگیر ترین کیخلاف مقدمات سننے کے بعد ایک ساتھ فیصلہ کرنا چاہتے ہیں، چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا
فیصلہ محفوظ ہونے کے بعد وکیل تبدیل نہیں کیا جاسکتا ہے، جہانگیر ترین
ریفرنس اسپیکر نے ارسال کیا ہے تو پھر ریفرنس دائر کرنے والے ارکان اسمبلی غیر متعلقہ ہوگئے ہیں اسپیکر کو اپنے ریفرنس کا دفاع کرنا ہوگا، نعیم بخاری
پاکستان مسلم لیگ ن احتساب سے بچنے کیلئے تاخیر حربے استعمال کر رہی ہے، نعیم الحق
حکومت اب تک ادھے درجن سے زیادہ وکیل تبدیل کر چکی ہے، فواد چوہدری

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان اور جہانگیر ترین کی نا اہلی کیلئے سپیکر کی جانب سے بھجوائے جانے والے ریفرنسز کی سماعت 26دسمبر جبکہ وزیر اعظم کے داماد کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف نااہلی ریفرنس کی سماعت 19دسمبر تک ملتوی کر دی ہے ،

پی ٹی آئی کے چیرمین عمران خان اور جہانگیر ترین کے خلاف ریفرنسز کے دلائل کے موقع پر مسلم لیگ ن کی جانب سے وکیل کی تبدیلی اور سماعت ملتوی کرنے کی درخواست کی گئی جبکہ پی ٹی آئی کے وکیل نعیم بخاری نے ریفرنسز کی سماعت کے موقع پر دلائل کیلئے تیار اور کسی بھی تاریخ پر حاضر ہونے کی پیش کش کر دی ہے ۔جمعرات کے روز چیف الیکشن کمشنر سردارمحمد رضا کی سربراہی میں الیکشن کمیشن کے تین رکنی بینچ نے پی ٹی آئی کے چیرمین عمران خان جہانگیر ترین اور وزیر اعظم کے داماد کیپٹن(ر) صفدر کے خلاف دائر نااہلی ریفرنسز کی سماعت کی سماعت کے موقع پر پاکستان مسلم لیگ نواز کے رکن اسمبلی طلال چوہدری اور محمد خان ڈاہا کی جانب سے پیش ہونے والے وکیل نے الیکشن کمیشن سے استدعا کی کہ ہم اپنا وکیل تبدیل کرنا چاہتے ہیں اور اکرم شیخ ایڈوکیٹ کو نیا وکیل مقرر کررہے ہیں لہذا ہمیں مذید وقت دیا جائے

جس پر جہانگیر ترین کے وکیل نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ فیصلہ محفوظ ہونے کے بعد وکیل تبدیل نہیں کیا جاسکتا ہے اس موقع پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ عمران خان اور جہانگیر ترین کیخلاف مقدمات سننے کے بعد ایک ساتھ فیصلہ کرنا چاہتے ہیں عمران خان کے وکیل نعیم بخاری نے کہا کہ ریفرنس اسپیکر نے ارسال کیا ہے تو پھر ریفرنس دائر کرنے والے ارکان اسمبلی غیر متعلقہ ہوگئے ہیں اسپیکر کو اپنے ریفرنس کا دفاع کرنا ہوگا انہوں نے کہاکہ ہم بحث کے لئے آج بھی تیار ہیں جہانگیر ترین کے وکیل نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی جانب سے جان بوجھ کر تاخیر ی حربے اختیار کئے جارہے ہیں

جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ کمیشن کے ایک ممبر کی آنکھ کا آپریشن ہے تو نعیم بخاری نے کہا کہ اس عمر میں یہی ہوتا ہے آنکھوں میں موتیا اتر آتا ہے چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ عمر میں آپ بھی اتنے چھوٹے نہیں ہیں الیکشن کمیشن نے کیپٹن صفدر کی نااہلی کیسز کی سماعت بھی19 دسمبر تک ملتوی کردی ہے اس موقع پر پا سکتان تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق نے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ ن احتساب سے بچنے کیلئے تاخیر حربے استعمال کر رہی ہے انہوں نے کہاکہ آج الیکشن کمیشن نے کیس کا فیصلہ سنانا تھا مگر مسلم لیگ ن کی جانب سے وکیل کی تبدیلی کا بہانہ بنا کر کیس کو طول دینے کی کوشش کی جارہی ہے

انہوں نے کہاکہ انہوں نے کہاکہ مسلم لیگ ن کے وکیل الیکشن کمیشن میں کہتے ہیں کہ کیس سپریم کورٹ میں ہے جبکہ سپریم کورٹ میں یہ موقف اختیار کرتے ہیں کہ کیس الیکشن کمیشن میں ہے انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی موجودہ حکمرانوں کے کرپشن کو ہر صورت بے نقاب کرے گی اور سپریم کورٹ ،الیکشن کمیشن ،پارلیمنٹ ہاؤس اور عوام کی عدالت میں بے نقاب کریں گے پی ٹی آئی کے قانونی مشیر فواد چوہدری نے کہاکہ حکومت اب تک ادھے درجن سے زیادہ وکیل تبدیل کر چکی ہے انہوں نے کہاکہ سپیکر قومی اسمبلی نے پی ٹی آئی کو قومی اسمبلی میں بات کرنے کی اجازت نہ دیکر پارلیمنٹ کے وقار کو مجروح کیا ہے انہوں نے کہاکہ سپیکر قومی اسمبلی وزیر اعظم کے ترجمان بن چکے ہیں اور لاہور کی میئر شپ پر اپنے منشی کو منتخب کرانے کے بدلے اپنی حیثیت کو متنازعہ کر دیا ہے انہوں نے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف نے اگلے الیکشن کی تیاریاں شروع کر دی ہیں اور جلد ہی عوامی رابطہ مہم ٓکاغاز کر دیا جائے گا انہوں نے کہاکہ پانامہ سیکنڈل کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے حکمرانوں کا پیچھا کرتے رہیں گے ۔