Cloud Front
Australia vs Pakistan

آسٹریلیا نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پاکستان کو 39 رنز سے ہرا دیا

برسبین ٹیسٹ: آسٹریلیا نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد پاکستان کو 39 رنز سے ہرا دیا، اسد شفیق اور ٹیل اینڈرز نے میچ یادگار بنا دیا
490 کے جواب میں گرین شرٹس 450رنز بنا کر آؤٹ ، اسد شفیق کے شاندار 137رنز میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے
اظہر علی نے 71 اور یونس خان نے 65 رنز بنائے، یاسر شاہ 33 رنز بناکر رن آؤٹ ہوئے، مائیکل اسٹارک نے 4،جیکسن برڈ نے 3کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

برسبین: پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان ہونے والے پہلے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ میچ میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد آسٹریلیانے پاکستان کو 39 رنز سے شکست دے دی۔گابا کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے سیریز کے پہلے ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا نے جیت کے لیے پاکستان کو 490 رنز کا ہدف دیا، جس کے تعاقب میں پاکستان کی پوری ٹیم 450 رنز پر آؤٹ ہوگئی۔

پاکستان کو تاریخی جیت کے لیے محض 40 رنز درکار تھے، مگر پوری ٹیم ہدف حاصل کرنے سے قبل آؤٹ ہوگئی، پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ اسکور اسد شفیق نے کیا، انھوں نے شاندار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 137 رنز بنائے اور مین آف دی میچ قرار پائے۔اظہر علی نے 71 اور یونس خان نے 65 رنز بنائے، یاسر شاہ 33 رنز بناکر رن آؤٹ ہوئے جب کہ سرفراز احمد 24 رنز پر مائیکل اسٹارک کی گیند کا شکار بنے، وہاب ریاض 30 رنز بناکر کیچ آؤٹ ہوئے جب کہ راحت علی ایک رن پر رن آؤٹ ہوکر پویلین لوٹے۔پاکستان کی جانب سے محمد عامر نے 48، بابر اعظم نے 14 اور کپتان مصباح الحق نے صرف 5 رنز بنائے۔

آسٹریلیا کی جانب سے مائیکل اسٹارک نے 119 رنز دے کر پاکستان کے 4 کھلاڑیوں کا شکار کیا جب کہ جیکسن برڈ نے 110 رنز کے بدلے 3 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔ آسٹریلوی باؤلر نیتھن لیون 108 رنز کے بدلے 2 پاکستانی کھلاڑیوں کو آؤٹ کرنے میں کامیاب ہوئے جب کہ جوش ہزلے ووڈ اور نک میڈنسن کوئی وکٹ نہیں لے سکے۔پاکستان نے پانچویں دن کا کھیل آٹھ وکٹ کے نقصان پر 382 رنز سے شروع کیا، پاکستان کو فتح کے لیے مزید 108 رنز جبکہ آسٹریلیا کو دو وکٹیں درکار تھیں۔یاد رہے کہ پاکستان نے اپنی چھ سے زائد دہائیوں پر محیط ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں آسٹریلیا کے متعدد دورے کیے لیکن کامیابی کا تناسب غیر تسلی بخش رہا۔یہ بڑے تعجب کی بات ہے کہ ابتدائی عشروں میں پاکستان ٹیم کی کارکردگی آسٹریلیا کے متعدد دوروں میں بہتر رہی لیکن وقت کے ساتھ ساتھ کارکردگی میں نمایاں تنزلی ہوئی ہے۔ پاکستان نے آسٹریلیا میں آخری مرتبہ سڈنی کے مقام پر 1995 میں ٹیسٹ میچ میں فتح حاصل کی تھی اور اب پاکستان کو آسٹریلیا میں کوئی ٹیسٹ میچ جیتے 20 سال سے زائد کا عرصہ گزر چکا ہے۔