Cloud Front
saudi foreign minister

سعودی عرب کا ایران کی مداخلت روکنے کے لیے سخت اقدام کا مطالبہ

یمن سے متعلق کوئی بھی سمجھوتا خلیجی اقدام پر مبنی ہونا چاہیے: عادل الجبیر

الریاض249 : سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے عا لمی دنیا سے یہ مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران کی خطے میں مداخلت کو روکنے کے لیے سخت اقدام کیا جائے۔ یمن کے بارے میں کوئی بھی سمجھوتا خلیجی اقدام اور اقوام متحدہ کے فیصلے پر مبنی ہونا چاہیے۔ ریاض میں امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے۔اس موقع پر جان کیری نے کہا کہ داعش شکست سے دوچار ہونے والے ہیں۔انھوں نے یمن کے جنوبی شہر عدن میں اتوار کے روز داعش کے خودکش بم حملے کی مذمت کی ہے۔

اس میں انچاس یمنی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔انھوں نے کہا کہ دنیا کو یمن میں جنگ کا اس انداز میں خاتمہ کرنا چاہیے کہ اس سے سعودی عرب کی سکیورٹی کا تحفظ ہو۔انھوں نے یمن کے تمام فریقوں پر زوردیا ہے کہ وہ اپنے ملک میں بگڑتی ہوئی صورت حال کے خاتمے کے لیے مذاکرات کی میز پر جلد لوٹ آئیں۔جان کیری نے بھی واضح کیا کہ سعودی عرب کی طرح ان کا ملک ایران کی یمن میں مداخلت کو مسترد کرتا ہے۔بطور امریکی وزیر خارجہ ان کا سعودی عرب کا یہ آخری دورہ ہے اور انھوں نے وزیر خارجہ عادل الجبیر سے بات چیت سے قبل شاہ سلمان بن عبدالعزیز ،ولی عہد شہزادہ محمد بن نایف سے الگ الگ ملاقات کی ہے اور ان سے دوطرفہ تعلقات اور خطے کی تازہ صورت حال پر تبادلہ خیال کیا ہے