Cloud Front

ایبٹ آباد کمیشن اور جسٹس (ر)جاوید اقبال ..!

کمیشن رپورٹ میں تمام حقائق لکھ دیئے ،منظرعام پرلاناحکومت کاکام ہے، جسٹس (ر)جاوید اقبال
ایبٹ آبادکمیشن کوحکومت نے 5کروڑروپے دیئے تھے ،جوواپس کردیئے، سربراہ ایبٹ آباد کمیشن

اسلام آباد: ایبٹ آبادکمیشن کے سبراہ جسٹس(ر)جاویداقبال نے کہاہے کہ کمیشن رپورٹ میں تمام حقائق لکھ دیئے ہیں ،منظرعام پرلاناحکومت کاکام ہے ،حکومت رپورٹ سامنے لائے ۔ میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے جاویداقبال نے کہاکہ ایبٹ آبادکمیشن کوحکومت نے 5کروڑروپے دیئے تھے ،جوواپس کردیئے ہیں ،کمیشن کی رپورٹ میں ذمہ داروں کادلائل کے ساتھ مکمل تعین کیاگیاتھا اس رپورٹ کوشائع کرناحکومت کاکام ہے ،حکومت رپورٹ کومنظرعام پرلائے ۔انہوں نے کہاکہ میں نے حلف لیاہواہے ،میری بیٹی نے مجھ سے پوچھاکہ اسامہ وہاں تھاکہ نہیں تومیں نے جواب دیاکہ یہ بتادوں توپیچھے رہ کیاجائیگا

یہاں‌پر سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اگر وہ اس رپورٹ کو منظر عام پر نہیں‌لاسکتے تو ملکی سلامتی کن ہاتھوں میں ہے اس رپورٹ میں‌ ایسا کیا انکشاف کیا گیا جس پر انہیں ایسا بیان دینا پڑ رہا ہے ماہرین کی رائے کے مطابق جسٹس (ر) جاوید اقبال کو اس رپورٹ کو منظرعام پر لاکر ہی دم لینا چاہیے کیونکہ یہ ملکی سلامتی کا معاملہ ہے کہ سات سمند پار ایک ملک رات کی تاریکی میں سرجیکل سٹرائیک کرتا ہے ٹارگٹ کو نشانہ بناکر لاشوں کو اپنے ساتھ لیکر چلا جاتا ہے اور بعد میں‌تاثر پیش کیا جاتا ہے کہ اس آپریشن کے بارے میں آرمی چیف تک آگاہ نہیں‌تھے اگر آرمی چیف آگاہ نہیں‌تھے تو پھر یہ کیسے ممکن ہوا؟ یہ تو رپورٹ کے منظر عام پر آنے سے ہی پتا چلے گا لیکن پاکستان میں کمیشنز پر عوام کا اعتماد اٹھتا جارہا ہے

Justice (R) Javed Iqbal