Cloud Front
Child Begging

بچے کرائے پر چاہییں ؟

اکثر ٹریفک سگنلز پر لال بتی کے آن ہونے کے بعد اچانک گاڑی کے پاس بھیک مانگنے والی عورتیں‌ نمودار ہو جاتی ہیں جن کی گود میں ایک بچہ ہوتا ہے جو نیم بیہوشی کی حالت یا غنودگی میں ہوتا ہے اکثریت معصوم بچے کی حالت دیکھ کر مدد کر دیتے ہیں یہ بھیک مانگنے کا نہایت منظم طریقہ ہے جس کے پیچھے پورا مافیا ہوتا ہے جو گداگری کا یہ کاروبار چلاتا ہے

غور کیا جائے تو بھکاری خواتین کے پاس بچوں کی عمر ایک ہی ہوتی ہے ہمیشہ ایک ہی عمر کے بچے کیوں ہوتے ہیں اور اگر آپ کسی بھکاری کو فالو کریں کچھ دن تحقیق کی جائے تو حقیقت عیاں‌ہوتی ہے کہ وہ بچے تبدیل ہوتے ہیں‌ایک خاتون بھکاری تقریبآ ایک سال تک ایک بچے کو ساتھ رکھتی ہے

ان بچوں کو چادر میں‌لپیٹ کر رکھاجاتا ہے اور افیم دی جاتی ہے جس کی بدولت وہ غنودگی کی حالت میں پڑے رہتے ہیں تاکہ ان کو بھوک لگنے پر کچھ کھلانا نہ پڑے میڈیکلی دیکھا جائے تو ان بچوں پر افیم کے اثرات نمودار ہوتے ہیں اور جب وہ بڑے ہوتے ہیں‌ ان سے بھی گداگری کا کام لیا جاتا ہے چونکہ انہیں نشے کی لت لگ چکی ہوتی ہے اس لئے وہ بھیک مانگنے پر مجبور ہوتے ہیں جس کے عوض انہیں مافیا کی جانب سے نشہ مہیا کیا جاتا ہے

یہاں پر سوال پیدا ہوتا ہے چائلڈ پروٹیکشن بیور اور متعلقہ وزارت کیا کر رہی ہیں ان کے کردار پر سوالیہ نشان ہے !