Cloud Front

سال 2016 : کیا کھویا کیا پایا !‌

سال دسمبر 2016 اپنے آخری ایام میں داخل ہوچکا ہے چونکہ سال کا آخری مہینہ دسمبر ہوتا ہے جو کافی سرد تاثیر رکھتا ہے جو جاتے جاتے کئی سر یادیں بکھیر جاتا ہے کچھ ایسے خلا چھوڑ جاتا ہے جن کی کمی آئندہ سال محسوس ہوتی رہیتی ہیں ایسے ہی خلا سال 2016 بھی چھوڑ کر گیا ہے جس نے ہم سے ملک کے نامور شخصیت کو چھین لیا.

  • عبدالستار ایدھی :‌عبد الستار ایدھی کا زندگی کا سفر جولائی 2016 میں اختتام پذیر ہوا. انہوں نے اپنی 92سالا زندگی انسانیت کی خدمت میں بسر کردی، انہوں نے رنگ و نسل، ملک و قوم اور مذہب کی تفریق کیے بغیر انساینت کی خدمت کی جس کے عوض پوری دنیا ان کی خدمات کا اعتراف کرتی ہےAbdul Sattar Eidihi
  • امجد صابری ‌:امجد صابری انسانیت کا ہمدرد، حضور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کا ثناء خوان اس سال کراچی میں ٹارگٹ کلنگ کا شکار بن گیا. ان کی ساری زندگی پر طائرانہ نظر ڈالی جائے تو ان کی جانب سے کسی کے خلاف ایک لفظ بھی سننے کو نہیں ملے گا
    ان کو بظاہر تو درندگی کا نشانہ بنا کر موت کی نیند سلادیا گیا لیکن ان کی آواز ” تاجدار حرم ” و دیگر قوالیوں کی شکلوں میں ہمیشہ کانوں میں گونجتی رہے گی

    Amjad Sabri

    • جنید جمشید :
      جنید جمشید ایک چمکتا ہوا ستارہ پی آئی اے کی غفلت کی نذر ہو گیا جنید جمشید سال 2016 کے آخر دسمبر میں‌ سر یادیں چھوڑ گئےJuniad Jamshid
  • جہانگیر بدر
    سیاست میں بھی پاکستان کو اس سال بڑا داغ مفارقت ملا ہے ایک منجھا ہوا سیاسی ورکر جس کی زندگی حقیقی سیاست کی نذر ہوئی، جس نے بھٹو کے جیالے کے طور پر اہم کردار ادا کیا، جو سٹوڈنٹ لیڈر تھا تو کمال تھا جہانگیر بدر کا خلا ملکی سیاست میں مشکل ہی ہے جو پورا ہوسکے کیونکہ وہ ایک ہی تھا جو چلاگیاJahangir Badar
  • اے نئیر :

    شوبز میں سے کلاسیکل موسیقی کے دیوتا پلے بیک سنگنگ کے بے تاج بادشاہ اے نیئر بھی اسی سال دنیا فانی سے کوچ کر گئے . گلوگار اے نیئر کو پہلی بار 1979 میں نگار ایوارڈ سے نوازا گیا تھا انھوں بہترین گلوکار کی حیثیت سے پانچ مرتبہ نگار ایوارڈ اپنے نام کیا۔

    A Nayyar

  • یاور حیات :
    یاور حیات ملک تمثیل کا شہزادہ بھی اسی سال ہم سے دور ہو گیا ، یاور حیات پاکستان کے ڈراموں کے حسین امتزاج اور عروج کے ایک چراغ تھے وہ پی ٹی وی کے سنہرے دور کے آخری چراغ تھے ان کی جی ایم پی ٹی وی کے اور دیگر خدمات آج بھی سنہری حروف میں لکھی ہیںYawar Hayat
  • شہلا بلوچ :
    شوبز، سیاست و سماجی حلقوں کے علاوہ سپورٹس میں سے کستان کی خواتین فٹ بال کی ٹیم میں شامل اسٹرائیکر شہلا بلوچ 20 سال کی عمر میں ایک کار حادثے میں خالق حقیقی سے جا ملیں

    Shahla Baloch

  • شمیم آراء :
    اس سال فن کا روشن ستارہ بھی ڈوب گیا شمیم آراء فلمی رجحانات کو ایک نئی جہت بخشنے والی اداکاراؤں میں سے تھیں
    شمیم آرا کا اصل نام پتلی بائی تھا وہ 1938 میں ہندوستان کے شہر علی گڑھ میں پیدا ہوئیں، انہیں چار مرتبہ نگار ایوارڈ سے بھی نوازا گیا

    Shamim Ara

  • فاطمہ ثریا بجیا : شہرہ آفاق ڈرامہ نگار، عظیم ادیب فاطمہ ثریا بجیا بھی اسی سال ہمیں داغ مفارقت دیکر گئیں
    حکومت پاکستان نے ان کی خدمات کے صلے میں انھیں تمغہ حسن کارکردگی اور ہلال امتیاز سے نوازا۔

    Fatima Sarya Bajia