Cloud Front
Junaid Khan

جنید خان ایک روزہ کرکٹ میں واپسی کیلئے پرعزم

اپنی کارکردگی کے بعد بہت اچھا محسوس کر رہا ہوں ، صرف وکٹیں لینے پر ہی نہیں بلکہ جس طرح باؤلنگ کی اس پر بھی بہت خوش ہوں، جنید خان

لاہور: بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں عمدہ کارکردگی دکھانے والے پاکستانی فاسٹ باؤلر جنید خان نے پاکستان کے ایک روزہ اسکواڈ میں واپسی کا عزم ظاہر کیا ہے۔ میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے فاسٹ باؤلر نے کہا کہ وہ اپنی کارکردگی کے بعد بہت اچھا محسوس کر رہے ہیں، میں صرف وکٹیں لینے پر ہی نہیں بلکہ جس طرح باؤلنگ کی اس پر بھی بہت خوش ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں انگلینڈ میں تھا جب میں نے یہ خبر سنی اور میں نے اس من گھڑت خبر کی تردید کی تھی کہ میں پاکستان کے بجائے انگلینڈ کیلئے کھیلنا چاہتا ہوں۔’

میں ہمیشہ سے اپنے ملک کی نمائندگی کرنا چاہتا ہوں لیکن جب مجھے ٹیم سے ڈراپ کیا گیا تو مایوسی ہوئی کیونکہ میں گزشتہ چند سالوں سے ٹیم کا مستقل رکن رہا۔فاسٹ باؤلر نے مزید کہا کہ میں اس وقت کارکردگی دکھانے کی کوشش کر رہا ہوں تاکہ حالیہ ڈومیسٹک ٹورنامنٹ میں کارکردگی سے سلیکٹرز کو مطمئن کر سکوں۔جنید نے کہا کہ میں باؤلنگ کے بارے میں بالکل ویسا ہی محسوس کر رہا ہوں جیسا 2012 اور 2013 میں محسوس کرتا تھا جب میں ناصرف اہم وکٹیں لے رہا تھا بلکہ ٹیم کی فتح میں بھی اہم کردار ادا کررہا تھا۔2011 میں انٹرنیشنل ڈیبیو کرنے والے جنید خان نے 2012 سے 2013 کے دوران عمدہ باؤلنگ سے شائقین اور ناقدین کے دل جیت لیے تھے اور ہندوستان کے خلاف سیریز میں روہت شرما اور ویرات کوہلی جیسے کھلاڑیوں کی ایک نہ چلنے دی تھی۔جنوبی افریقہ کے خلاف دوسرے ایک روزہ میچ میں انہوں نے فتح گر باؤلنگ کرتے ہوئے آخری اوور میں 9 رنز کا دفاع کر کے گرین شرٹس کو جنوبی افریقہ کے خلاف پہلی ون ڈے سیریز میں فتح سے ہمکنار کرایا۔

انہوں نے کہا کہ میں پاکستانی ٹیم کا مستقل رکن بننا چاہتا ہوں اور اگر آسٹریلیا کے خلاف ایک روزہ میچوں کی سیریز کیلئے میرا انتخاب ہوتا ہے تو یہ بہترین امر ہو گا کیونکہ وہاں کی وکٹوں میں سوئنگ اور باؤنس ہے اور وہ جیسے فاسٹ باؤلرز کی معاونت کرتی ہیں۔