Cloud Front
Lahore High Court

صوبہ بھر میں بوگس اور ناقص کارکردگی والے لاء کالجز کی فہرستیں تیار!

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کا صوبہ بھر میں بوگس اور ناقص کارکردگی والے لاء کالجز کی فہرستیں تیار کرنے کا حکم

سرگودھا: صوبہ بھر میں بوگس اور ناقص کارکردگی والے لاء کالجز کی فہرستیں تیار کرنے کا حکم، لاہور ہائیکورٹ نے تین رکنی لاء کمیشن کالج بنا کر 19 جنوری تک رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس سید منصور علی شاہ نے لاء کی تعلیم کے گرتے ہوئے معیار کی جانچ پڑتال کرنے کے لئے فوری طور پر کمیشن تشکیل دے دیا ہے جس کے چیئر مین ایڈووکیٹ جنرل پنجاب شکیل الرحمن ہونگے۔

جبکہ دیگر ممبران میں پاکستان بار کونسل اشتیاق اے خان اور پنجاب بار کونسل کے رانا انتخاب عالم سمیت دیگر عہدیداران کمیٹی کے ممبران ہونگے، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے حکم دیا ہے کہ ایسے تمام بوگس لاء کالجوں کی فہرست الگ تیار کی جائے جو صرف نام کے بنے ہوئے ہیں۔ جبکہ ناقص تعلیمی معیار کے حامل لاء کالجز کی فہرست الگ تیار کی جائے۔ اور ساتھ ہی ان تمام کالجز کی بھی فہرست الگ رکھی جائے جو لاء کی تعلیم میں اعلیٰ کارکردگی دکھا رہے ہیں، بنائی گئی کمیٹی ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کی سربراہی میں بنائی گئی ہیں۔