Cloud Front
Australia vs Pakistan

کیا پاکستان نے کرکٹ کی تاریخ کا بدترین ریویو لیا؟

آسٹریلین اننگز کے آغاز میں پاکستانی ٹیم نے ایک ایسی گیند پر ڈی آر ایس کا استعمال کیا جس کا کوئی یقین نہیں کر سکتا

میلبورن: کرکٹ میں ڈی آر ایس سسٹم متعارف کرائے جانے کے بعد کئی مرتبہ کھلاڑی غلط فیصلے کا شکار ہونے سے بچے تو متعدد مرتبہ امپائروں کو اپنے غلط فیصلے تبدیل کرنا پڑے لیکن کئی ٹیمیں ایسی ہیں جو اس سہولت سے صحیح طریقے سے فائدہ اٹھانے میں ناکام رہیں جن میں سے ایک پاکستانی ٹیم ہے۔آسٹریلیا اور پاکستان کے مابین دوسرے ٹیسٹ میچ میں اظہر علی کی ڈبل سنچری کے جواب میں آسٹریلیا نے ڈویاڈ وارنر کی 144 رنز کی شاندار اننگز کی بدولت اپنی پوزیشن مستحکم کرتے ہوئے دو وکٹ کے نقصان پر 278 رنز بنا لیے۔

تاہم ڈی آر ایس کے معاملے میں ہمیشہ سے غیر ذمے داری کا مظاہرہ کرنے والی پاکستانی ٹیم نے آسٹریلین اننگز کے آغاز میں پاکستانی ٹیم نے ایک ایسی گیند پر ڈی آر ایس کا استعمال کیا جس کا کوئی یقین نہیں کر سکتا۔آسٹریلیا کا اسکور تین رنز تھا کہ عامر کی ڈیوڈ وارنر کو کرائی گئی ایک گیند بلے کے انتہائی دور سے ہوتی ہوئی وکٹ کیپر سرفراز تک پہنچی جنہوں نے کیچ کی اپیل کردی۔گیند بلے کے اس حد تک دور سے گزری کہ محمد عامر نے اپیل کرنے کی زحمت بھی نہ کی لیکن سرفراز اپنی بات پر مصر رہے اور قومی ٹیم کے کپتان مصباح الحق نے ان کے پرزور اصرار پر ریویو لے لیا۔اس فیصلے پر ڈیوڈ وارنر کے ساتھ ساتھ کمنٹیٹرز بھی حیران پریشان نظر آئے اور جب تھرڈ امپائر سے رجوع کیا گیا تو اس بات کی تصدیق ہوئی کہ گیند عارنر کے کے بیٹ کے کافی دور سے گئی تھی۔اس وقت وارنر دو رنز پر بیٹنگ کر رہے تھے اور انہوں بعد میں 144 رنز کی اننگ کھیلی۔