Cloud Front
Mustafa Kamal

اقتدار اور طاقت کی چاہت ہوتی تو کبھی خود کو خطرے میں ڈال کر اقتدار سے علیحدہ نہ ہوتے، سید مصطفی کمال

اقتدار اور طاقت کی چاہت ہوتی تو کبھی خود کو خطرے میں ڈال کر اقتدار سے علیحدہ نہ ہوتے، سید مصطفی کمال
پی ایس پی ملک کی واحد جماعت ہے جس میں آنے کے لیئے سب اپنے اقتدار اور طاقت کی قربانی دے کر عوام کی خدمت کے جذبے کے ساتھ شریک ہو رہے ہیں،لیاقت آباد ٹاؤن آفس کے ا فتتاح اور پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب

کراچی : چیئر مین پاک سر زمین پارٹی سید مصطفی کمال نے ڈسٹرکٹ سینٹرل کے لیاقت آباد ٹاؤن آفس کے ا فتتاح اور پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کیا ۔اس موقع پر لیاقت آباد کی عوام نے سید مصطفی کمال کا بھرپور استقبال کیا ،خواتین ،بچوں اور بزرگوں نے پی ایس پی سے محبت کا والہانہ اظہار کرتے ہوئے رہنماؤں پر گل پاشی کی اورکامیابی کے لئے دعائیں کیں۔اس موقع پرمصطفی کمال نے کہا کہ 3 مارچ 2016 کو حق اور سچ کی جو آواز 2 لوگوں نے بلند کی اور وقت کے فرعونوں کو للکارا اس پر کراچی سے لیکر کشمیر تک پاکستانیوں نے لبیک کہااور آج لاکھوں لوگ وطن پرستی کے قافلے میں شامل ہوچکے ہیں جس کی مثال دنیا کی تاریخ میں نہیں ملتی۔انہوں نے کہا کہ یہ ملک کی واحد جماعت ہے جس میں آنے کے لیئے سب اپنے اقتدار اور طاقت کی قربانی دے کر عوام کی خدمت کے جذبے کے ساتھ شریک ہو رہے ہیں ،

ہمارے پاس اقتدار اور طاقت موجود تھی جسے عوام کے مفاد میں ٹھکرا دیا کیونکہ جہاں عوامی فلاح سے متعلق فیصلے ہونے تھے وہاں عوام کے حقوق کی کوئی بات نہیں ہوتی تھی ،ہمیں اقتدار اور طاقت کی چاہت ہوتی تو کبھی خود کو خطرے میں ڈال کر اقتدار سے علیحدہ نہ ہوتے بلکہ یہ ڈر تھا کہ مرنے کے بعد ہم سے سوال ہوگا کہ جب میری مخلوق کے ساتھ زیادتی ہورہی تھی اسے اندھی کھائی میں دکھیلا جا رہاتھا نسلوں کو جاہل کیا جا رہاتھا تو مصطفی کمال اور انیس قائم خانی دبئی میں عیش کر رہے تھے یا اپنی قوم کو حقیقت سے آگاہ کر رہے تھے ،اس لئے ہم جدوجہد کرنے نکلے ہیں ، ہمیں اچھائی اور محبت کی تبلیغ کرنی ہے۔ جھوٹ ،فریب اور منافقت کی سیاست اب ملک میں نہیں چلے گی ،30 سالوں تک مہاجروں کا نام لے کر انہیں ملک بھر میں بدنام کیا گیاجو بانیانِ پاکستان کی اولادیں ہیں ۔مہاجروں کو ان کی آنے والی نسلوں کی محرومیاں دکھا کر غلط راہ پر گامزن کر دیا گیا جس کی وجہ سے وہ باقی قومیتوں سے علیحدہ تصور کیئے جانے لگے ،

ان کی حب الوطنی پر سوالیہ نشان لگ گیا ،مہاجروں کی مائیں اپنے بچوں سے محروم ہو گئیں ،بہنوں نے بھائی گنوا دیئے، بچے یتیم ہوگئے ۔مہاجروں نے فطرہ ،زکواۃ ، کھالیں سمیت جو کچھ ان سے مانگا گیا وہ سب دیا لیکن مہاجروں کے بھروسے اور وفاداری کو راء کے ایجنٹس نے ملک کے دشمنوں کو بیچ دیا ،اور چند برے لوگوں کی وجہ سے پوری قوم پر بدنما داغ لگ گیا،حالانکہ یہ تہذیب یافتہ ، ملک سے محبت کرنے والے لوگ ہیں جنہوں نے پاکستان بنانے اور اسے بچانے کے لیئے ہمیشہ اپنی جانوں کے نظرانے دیئے۔ اس لئے کارکنوں کو یہ پیغام قوم کے ہر فرد تک پہنچانا ہے کہ رنگ ، زبان اور نسل کی بنیاد پر ہمارا کوئی دشمن نہیں ہے، ہم محبتوں کے سوداگر ہیں نفرتوں کو ختم کرنے آئے ہیں بحیثیت قوم ہم سب کو متحدد ہونا ہے اورملک دشمن عناصرکو بھی اپنا پیغام پہنچانا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پہلے انہیں شہر بنانے کا تجربہ نہیں تھا لیکن اب ان کے پاس شہر کو بنانے کا وسیع تجربہ ہے ، صرف 6 ماہ میں شہر کا نقشہ بدل دیں گے ،

اہلیان کراچی 2018 کے الیکشن کا انتظار نہیں کریں گے بلکہ ہمیں اپنے مسائل کا حل فوری چاہئے۔ اس لیئے29جنوری کو ایم اے جناغ روڈ پر جلسہ عام رکھا ہے ،جس کے بعدحکمرانوں سے کہیں گے کہ ہمارا حق ادھر رکھ!، ہمیں اپنے اسکولوں میں تعلیم ہسپتالوں میں دوائیں، اور تمام بنیادی سہولیات فوری طور پر چاہئیں۔ ہم اس قوم کی فلاح کا پیکج لے کر آئے ہیں،ہمیں لوگوں کو اپنے منشور پر لانا ہے کارکنوں کو ہتھیار اور اسلحہ نہیں دینا کہ وہ لوگوں کو قتل کریں اورکسی ماں کے بچے کی جان جائے بلکہ انہیں تعلیم کی طرف راغب کرنا ہے تاکہ وہ ملک و ملت کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کر یں۔اس موقع پرلیاقت آباد کی عوام نے پی ایس پی رہنماؤں کو 29جنوری کو ہونے والے جلسے میں بھرپورشرکت اور ہر موقع پر اپنے ساتھ کی یقین دہانی کروائی