Cloud Front
PMLN Case

ن لیگی رہنما لڑکی سے اجتماعی زیادتی کے الزام میں جوڈیشل ریمانڈ پر!

اسلام آباد،نیو ایئر نائٹ پر لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانیوالے مرکزی ملزم کو چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا
مقدمے میں ملوث دیگرتین ملزمان کی گرفتاری کے وارنٹ جاری

اسلام آباد: نیو ایئر نائٹ پر لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنانے والا مرکزی ملزم چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیج دیا گیا ۔ مقدمے میں ملوث دیگرتین ملزمان کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کر دیئے گئے۔ نوکری کا جھانسہ دے کر لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے والے ملزم چودھری توصیف کو پولیس تھانہ سہالہ نے ضلعی عدالت میں پیش کیا ، کیس کی سماعت جوڈیشل مجسٹریٹ رانا مجاہد رحیم نے کی۔پولیس نے عدالت سے استدعا کی کہ ملزم سے تفتیش اور دیگر ساتھیوں کے بارے پوچھ گچھ کے لیے جسمانی ریمانڈ دیا جائے، فاضل جج نے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کو مسترد کرتے ہوئے ملزم کو 14روزہ ریمانڈ پر اڈیالہ جیل روانہ کر دیا۔

فاضل جج نے مقدمہ میں نامزد تین ملزمان کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے،پولیس کی استدعا پر عدالت نے توقیر،کامران اور عمران آفتاب کے وارنٹ جاری کیے۔ واضح رہے کہچاروں افراد کے خلاف تھانہ سہالہ پولیس نے مقدمہ درج کیا ہے جس کے مطابق ملزمان پر رمیزہ صدف نامی خاتون کو نوکری کے بہانے بلا کر زیادتی کرنے کا الزام عائد ہے۔جنسی تشدد کی شکارخاتون کے سامنے اسکو نوکری کا جھانسہ دینے کے لئے خود کوملزم توصیف نے ممبر نیشنل اسمبلی، ملزم توقیر نے خود مظفرآباد کا جج،ملزم کامران نے خود کو ایس ایچ او اسلام آباد پولیس جبکہ ملزم عمران نے اپنے آپ کو بیوروکریٹ ظاہر کیا۔ ذرائع کے مطابق جنسی زیادتی کا مرکزی ملزم چودھری توصیف ن لیگ سہالہ کا جنرل سیکرٹری اور علاقے کی پراثر شخصیت ہے۔