Cloud Front

الیکشن کمیشن: عمران اور جہانگیر ترین کے خلاف ریفرنس کی سماعت 18 جنوری تک ملتوی

عمران اور جہانگیر ترین کے خلاف ریفرنس کی سماعت 18 جنوری تک ملتوی

عمران خان اور جہانگیرترین کی نااہلی سے متعلق ریفرنسز کی سماعت18 جنوری تک ملتوی
جس ادارے سے انصاف چاہتے ہیں اسی پر دبا ڈالتے ہیں، الیکشن کمیشن دبا ؤمیں نہیں آئے گا، چیف الیکشن کمشنر سردار رضا خان کا سیاسی رہنماؤں کی بیان بازی پر برہمی کا اظہار

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور جہانگیر ترین کی نااہلی سے متعلق سپیکر قومی اسمبلی کے ریفرنسز پر سماعت 18 جنوری تک ملتوی کر دی جبکہ چیف الیکشن کمشنر سردار رضا خان نے سیاسی رہنماؤں کی بیان بازی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس ادارے سے انصاف چاہتے ہیں اسی پر دبا ڈالتے ہیں، الیکشن کمیشن دبا ؤمیں نہیں آئے گا۔تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر سردار رضا خان کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے پی ٹی آئی کے چیئرمین عمران خان اور جہانگیر ترین کی نااہلی سے متعلق سپیکر قومی اسمبلی کے ریفرنسز پر سماعت کی۔

مسلم لیگ (ن)کے وکیل اکرم شیخ ناساز طبیعت کے باعث الیکشن کمیشن میں پیش نہ ہوئے اور عمران خان کے وکیل بھی غیر حاضر تھے جبکہ طلال چوہدری کے وکیل نے مزید وقت طلب کر لیا جس پر چیف الیکشن کمیشن نے برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ ریفرنسز کو آگے نہیں بڑھانا تو پھر واپس لے لیا جائے۔ باہر جا کر کہہ دیا جاتا ہے کہ ہم حکومت کے ساتھ مل گئے ہیں اور کیس سننا ہی نہیں چاہتے۔چیف الیکشن کمشنر نے جس ادارے سے انصاف چاہتے ہیں اسی پر دبا ڈالتے ہیں۔ حق میں فیصلہ ہو تو الیکشن کمیشن آزاد ہے، فیصلہ خلاف ہو تو تنقید کی جاتی ہے ۔ ہمارے خلاف بیانات دینے سے الیکشن کمیشن دبا ؤمیں نہیں آئے گا۔ چیف الیکشن کمشنر نے مزید ریمارکس دئیے کہ سیاست چمکانا چاہتے ہیں تو بیانات دیتے رہیں۔ الیکشن کمیشن نے ریفرنسز کی سماعت 18 جنوری تک ملتوی کر دی ہے۔