Cloud Front

پلی بارگین کا استعمال ہمیشہ عدلیہ کی منظوری سے ہوا ہے، چیئرمین نیب

چئیرمین نیب کی تقرری کا اختیار مقننہ کے پاس ہے،نیب سندھ میں صوبائی حکومت کے مکمل تعاون کے ساتھ کام کر رہی ہے، چوہدری قمر زمان کی میڈیاسے گفتگو

سکھر: چیئرمین نیب چوہدری قمر زمان نے کہا ہے کہ لوٹا ہوا مال واپس کرنے کا بہترین طریقہ پلی بارگین ہے جس کا استعمال ہمیشہ عدلیہ کی منظوری سے ہوا ہے، چئیرمین نیب کی تقرری کا اختیار مقننہ کے پاس ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے سکھر ریجن آفس کے دورے کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا دورے کے موقع پر پولیس کی جانب سے انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، چوہدری قمر زمان کامزید کہنا تھا کہ پلی بارگین کا نام تبدیل کرکے وی آر رکھا گیا ہے اس عمل سے قومی خزانے کو فائدہ ہوگا، کرپشن کیسسز میں ملوث ملزمان اگر جیل چلے جائیں

اور نقصان پورا نہ ہو تو کیا فائدہ ، ڈبل شاہ کیس میں نیب نے چار ارب کا نقصان پوری کرکے متاثرین میں تقسیم کیا ہے اسی طرح دنیا بھر کے قوانین میں پلی بارگین کے قوانین موجود ہیں اسی طرح عوام کے نقصان کو والنٹری ریٹرن سے پورا کیا جاسکتا ہے اگر ملزم جیل چلا بھی جائے لیکن اگر نقصان پورا نہیں ہوا تو کیا فائدہ ، ان کا کہنا تھا نیب نے قانون کے مطابق کام کرنا ہے جو نیا قانون کہتا ہے نیب وہ کرے گا، نیب سندھ میں صوبائی حکومت کے مکمل تعاون کے ساتھ کام کر رہی ہے، ان کا مزید کہنا تھا کہ نیب سکھر آفس نے دو سال میں اچھی کارکردگی دکھائی ہے لیکن ابھی کرپشن کے خلاف نیب کو مزید کام کرنے کی ضرورت ہے۔