Cloud Front

کینیڈا نے 7 مسلم ممالک کے پناہ گزینوں کو اپنے ملک میں پناہ دینے کی پیشکش کردی

امریکی صدر کا اقدام بلا جواز ، کسی بھی شخص کو نسل کی بنیاد پر نشانہ بنانا غیر انسانی فعل ہے،وزیر اعظم جسٹسن ٹریڈیو

اوٹاوا: کینیڈا نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے سات مسلم ممالک کے باشندوں پر اپنے ملک میں داخلے کی پابندی کے بعد ان ممالک کے پناہ گزینوں کو اپنے ملک میں پناہ دینے کی پیشکش کر دی ۔چینی خبررساں ادارے کے مطابق کینیڈین وزیر اعظم جسٹسن ٹریڈیو نے اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ ہم امریکی صدر ایگزیکٹو آرڈر کی زد میں آنے والے ان سات ممالک کے پناہ گزینوں کا اپنے ملک میں خیر مقدم کریں گے یہ افراد اپنے ملک میں ظلم و ستم ،دہشت گردی اور جنگ سے بھاگ کر آئے ہیں ہمارے دروازے ان کے لئے کھلے ہیں ،ہم بلا تفریق ان کی خدمت کریں گے ،

ان کا کہنا تھا کہ ہم شامی پناہ گزینوں کو بھی پناہ دیں گے ،کینیڈا نے امریکہ کی جانب سے دوہری شہرت کے حامی شہریوں پر پابندی کے حوالے سے کہا کہ ہم امریکی محکمہ خارجہ کے اس اقدام کے حوالے سے فوری طور پر کوئی رد عمل نہیں دے سکتے انہوں نے کہا کہ امریکی صدر کا یہ اقدام بلا جواز ہے اور کسی بھی شخص کو نسل کی بنیاد پر نشانہ بنانا غیر انسانی فعل تصور کیا جاتا ہے ۔