Cloud Front

پاکستان میں بھارتی فلموں کی یلغار!

پاکستان میں بھارتی فلموں کی یلغار :ریتک ر وشن کی ’’کابل‘‘کو آج نمائش کے لئے پیش کیا جائے گا ،’’رئیس‘‘اور ’’اے دل ہے مشکل‘‘اگلے ہفتے ، جمعہ کے روز ریلیز کر دی جائیں گی

لاہور (طارق مسعودسے) بھارتی فلموں کی نمائش کی اجازت ملتے ہی ملک میں بالی وڈ کی فلموں کی یلغار ہو گئی ہے ، اس وقت تین انڈین فلمیں ملک میں نمائش کے لئے پہہنچ چکی ہیں جن میں ریتک روشن کی ’’کابل‘‘ ،شاہ رخ اورماہرہ خان کی ’’رئیس ‘‘اور پاکستانی اداکار فواد خان کی فلم ’’اے دل ہے مشکل‘‘ شامل ہیں ۔۔۔۔ سنسر بورڈ سے سرٹیفیکٹ حاصل کر لینے والی ریتک روشن کی فلم ’’کابل ‘‘ کو آج ملک بھر میں نمائش کے لئے پیش کر دیا جائے گا ، ’’کابل ‘‘ کو ماضی کے معروف اداکار اور ریتک روشن کے والد راکیش روشن نے پروڈیوس کیا ہے جبکہ اس کے ڈائریکٹر سنجے گپتا ہیں،فلم کی ہیروئین کا کردار یمی گوتم نے اداکیا ہے ،’’کابل‘‘ایک اندھے لڑکے اور لڑکی کی کہانی ہے ، کہانی کا کلائمکس یہ ہے کہ انٹرول سے پہلے لڑکی کو ریپ کر کے قتل کر دیا جاتا ہے اور باقی کہانی میں اندھا ہیرو ریتک روشن دشمنوں سے اپنی محبوبہ کے قتل اور زیادتی کا بدلہ لیتا ہے ، بھارت میں یہ فلم پسند کی گئی تھی اور کے پہلے دن کا بزنس دس کروڑ تینتالیس لاکھ روپے تھا

شاہ رخ کی فلم ’’رئیس‘‘ اور پاکستانی اداکار فواد خان کی پہلی بھارتی فلم ’’اے دل ہے مشکل‘‘کو 10فروری کو پاکستان میں نمائش کے لئے پیش کر دیا جائے گا ۔شاہ رخ خان اور پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان کی ہنگامہ خیز فلم ’’رئیس‘‘نے ریلیز سے پہلے ہی پوری دنیا میں شہرت حاصل کر لی تھی اور وجہ اس شہرت کی بھارت کے انتہا پسند ہندو تھے جنہوں نے اس فلم میں پاکستاانی اداکارہ کی موجودگی کو بنیاد بنا کر خوب ہڑبونگ مچایا لیکن ان کو کچھ حاصل نہ ہو سکا بلکہ فلم نہ صرف نمائش سے پہلے ہی مقبول ہو گئی بلکہ نمائش کے بعد اس نے ریکارڈ بزنس کیا جو 200سو کروڑ سے بڑھ چکا ہے ،پاکستان میں بھی اس فلم کا شدت سے انتظار ہے اور اب اس فلم اور پاکستانی فلم بینوں کے درمیان صرف سنسر بورڈ کا سنسر سرٹیفیکٹ حائل ہے ، ’’رئیس‘‘ کی کاسٹ میں شاہ رخ خان ،ماہرہ خان اور نوازالدین صدیقی نمایاں ہیں ،’’رئیس ‘‘ کو فرحاں اختر نے پروڈیوس کیا ہے جبکہ ہدایتکار راہول ڈھولکیا ہیں۔

ملک میں 10فروری کو نمائش کی جانے والی پاکستانی اداکار فواد خان کی فلم ’’اے دل ہے مشکل‘‘ بھی اس وقت بھی بھارتی میڈیا کی زد میں ہے ، پہلے اس فلم پر ہندو انتہا پسندوں نے پاکستانی اداکار فواد خان کی موجودگی کا تنازعہ کھڑا کیا تھا اور ایم این ایس کے غنڈوں نے اس شرط پر کرن جوہر کو فلم کی ریلیز کی اجازت دی کہ وہ انڈین آرمی فنڈ میں جرمانے کے طور پرپانچ کروڑ روپے جمع کروائے علاوہ ازیں انہوں نے کرن جوہر سے یہ وعدہ لے لیا کہ وہ آئندہ کسی پاکستانی فنکار کو اپنی فلم میں کاسٹ نہیں کریں گے ، اس معائدے کو کرانے میں مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ نے اہم کردار ادا کیا تھا لیکن اب بھارتی سیاسی اور فوجی حلقوٓں نے اس قسم کا معائدہ کرواونے پر مہاراشٹر کے وزیر اعلٰی دیویندر فرنوس کو آڑے ہاتھوں لے رکھا ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فلم کی کاسٹ میں ایشوریہ رائے ، رنبیر کپور،انوشکا شرما اور فواد خان نمایاں ہیں ۔۔

Anushka Fawad Khan

ملک میں بالی وڈ کی فلموں کی نمائش سے سینما انڈسٹری کا بالی وڈ فلموں کی نمائش کا مطالبہ بھی پورا ہو جائے گا اوروہ ملکی فلم بین جو انڈین فلموں پر پابندی کی وجہ سے معیاری تفریح سے محروم ہو گئے تھے ان کو نئی فلمیں دیکھنے کا موقع بھی ملے گا ۔۔۔۔۔۔۔