Cloud Front
World Bank

پاکستان کو ترقی کے لئے عملی اصلاحات کرنے ہوں گے، سی ای او عالمی بنک

2050 میں پاکستان کی آبادی 40 کروڑ سے تجاوز کر جائے گی ، پاکستان کو صحت ‘ تعلیم اور خوراک پر ’’ جی پی ڈی ‘‘ تین فیصد سے بڑھا کر چھ فیصد کرنے کی ضرورت ہے ، رپورٹ

اسلام آباد : چیف ایگزیکٹو عالمی بنک کرسٹلینا حارجیوا نے کہا ہے کہ پاکستان کو ترقی کے لئے عملی اصلاحات کرنے ہوں گے ۔ پاکستان سے توانائی ‘ سکیورٹی اور آبی وسائل پر بات ہوئی ہیں ۔ 2050 میں پاکستان کی آبادی 40 کروڑ سے تجاوز کر جائے گی ۔ عالمی بنک کی چیف ایگزیکٹو کرسٹلینا نے نے دورہ پاکستان کے بعد جاری کردہ ایک رپورٹ میں کہا ہے ۔کہ پرامید ہوں کہ پاکستان آگے بڑھے گا اور پاکستان سے توانائی ‘ سکیورٹی اور آبی وسائل پر تفصیلی بات چیت ہوئی ہے پاکستان کو صحت ‘ تعلیم اور خوراک پر ’’ جی پی ڈی ‘‘ تین فیصد سے بڑھا کر چھ فیصد کرنے کی ضرورت ہے اور ٹیکسوں کی وصولی میں دوگنا کرنے کی ضرورت ہے ۔ کرسٹلینا نے کہا ہے کہ پاکستان کو بڑے چیلنجز سے نمٹنے کے لئے سرمایہ کاری بڑھانی چاہئے اور ملک میں ترقی کے لئے عملی اقدامات کرنے ہوں گے ۔

پاکستان کے لئے کاروبار کے ماحول میں بہتری اور انسانی وسائل کی ترقی کے لئے ایک بہت بڑا چیلنج ہے اور ’’ جی پی ڈی ‘‘ کو بھی 30 فیصد تک لے کر جانا بھی کسی چیلنج سے کم نہیں ۔ انہوں نے مزئید کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت نے مل کر سندھ طاس معاہدے پر اختلافات دور کرنے میں ہمیشہ مدد کی ۔2050 میں پاکستان کی آبادی چالیس کروڑ پہنچ جائے گی ۔ تربیلا ڈیم سائسن اور انجیئرنگ کے شعبے میں قابلیت کی یاد گار ہے انجینئر اپنی صلاحیتوں کو بروے کار لا کر اس سے بڑے شاہکار بنا کر پاکستان کا نام عالمی سطح پر اجاگر کریں ۔