Cloud Front
Khiam Sarhadi

ٓٓٓاپنی طرز کے منفرد اداکار خیام سرحدی کو بچھڑے 6سال بیت گئے!

اپنی طرز کے منفرد اداکار خیام سرحدی کو بچھڑے 6سال بیت گئے ،مرحوم نے فن اداکاری میں گہرے نقوش چھوڑے ہیں

لاہور (طارق مسعود سے ) خیام سرحدی نے ایک ایسے گھر میں آنکھ کھولی جہاں علم و فن کے چراغوں کی لو چار سو پھیلی رہتی تھی ،اس نے ضیا سر حدی کے ہاں جنم دیا، ، جن کو ممبئی کی فلم انڈسٹری میں ایک اعلٰی مقام حاصل تھا ، ان کی بنائی ہوئی فلموں کی کہانیاں اور سکرپٹس منفرد مقام رکھتی تھیں ۔فلمی صنعت میں ان کی حقیقت پسندانہ سوچ کا ایک زمانہ مداح تھا ، انہوں نے ’’ہم لوگ‘‘ جیسی فلم بنائی جس کو نصف صدی سے زیادہ کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی اہم مقام حاصل ہے ،ان کی دیگر فلموں میں ’’فٹ پاتھ، یتیم ۔ راہگزر،آواز ،انسان ،نادان اور بھولے بھالے نمایاں ہیں۔۔۔۔۔۔۔۔۔ضیا سرحدی چاہتے تھے کہ ان کا بیٹا پڑھ لکھ کر ڈاکٹر بنے لیکن خیام ایسا نہیں چاہتا تھا ، اسے والد کے پروفیشن سے دلچسپی تھی جو بعد میں اس کا شوق بن گیا ،والد ضیا سرحدی نے جب دیکھا کہ بیٹا ایکٹنگ اور ڈائریکشن کو بطور پروفیشن اپنانا چاہتا ہے تو انہوں نے اسے فلم ڈائریکشن اور ایکٹنگ کے رموز سیکھنے کے لئے یونان بھیج دیا لیکن خیام سرحدی فلم کورس مکمل کرنے کے بعد بھارت جانے کے بجائے پاکستان آ گیا اور باقی زندگی یہیں بسر کر دی ، خیام سرحدی کا تعلق اداکاری کے حقیقت پسندانہ سکول سے تھا ،اس کی فنی زندگی کا آغاز ریڈیو پاکستان سے ہوا ، اسی دوران اس نے تھیٹر کو بھی جوائن کر لیا اور باقاعدگی سے سٹیج ڈراموں میں حصہ لینے لگا۔خیام کی ایکٹنگ اور ڈائیلاگ ڈلیوری میں حقیقت کا رنگ نمایاں رہتا تھا ، پاکستان ٹیلی ویژن پر خیام کو یاور حیات نے متعارف کروایا ۔ خیام سرحدی نے جن سیریلز میں کام کیا ان میں وارث، ریزہ ریزہ ،من چلے کا سودا ، دہلیز ، لازوال اور سورج کے ساتھ سا تھ کے علاوہ کئی دوسرے سلسلہ وار کھیل شامل ہیں
خیام سرحدی نے پہلی شا دی اداکارہ عطیہ خیام سے کی ، ان سے علیحدگی کے بعد انہوں نے معروف اداکارہ صائقہ کو اپنے عقد میں لیا ، صائقہ میں سے ان کی تین بیٹیاں ہیں ۔خیام سرحدی چھ سال پہلے آج ہی کے دن دل کا دورہ پڑنے سے اس جہان فا نی سے کوچ کر گئے، ان کے ساتھی فنکار اکثر ان کی یادوں کو تازہ کرتے رہتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔
،مرحوم نے فن اداکاری میں گہرے نقوش چھوڑے ہیں

لاہور (طارق مسعود سے ) خیام سرحدی نے ایک ایسے گھر میں آنکھ کھولی جہاں علم و فن کے چراغوں کی لو چار سو پھیلی رہتی تھی ،اس نے ضیا سر حدی کے ہاں جنم دیا، ، جن کو ممبئی کی فلم انڈسٹری میں ایک اعلٰی مقام حاصل تھا ، ان کی بنائی ہوئی فلموں کی کہانیاں اور سکرپٹس منفرد مقام رکھتی تھیں ۔فلمی صنعت میں ان کی حقیقت پسندانہ سوچ کا ایک زمانہ مداح تھا ، انہوں نے ’’ہم لوگ‘‘ جیسی فلم بنائی جس کو نصف صدی سے زیادہ کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی اہم مقام حاصل ہے ،ان کی دیگر فلموں میں ’’فٹ پاتھ، یتیم ۔ راہگزر،آواز ،انسان ،نادان اور بھولے بھالے نمایاں ہیں۔

ضیا سرحدی چاہتے تھے کہ ان کا بیٹا پڑھ لکھ کر ڈاکٹر بنے لیکن خیام ایسا نہیں چاہتا تھا ، اسے والد کے پروفیشن سے دلچسپی تھی جو بعد میں اس کا شوق بن گیا ،والد ضیا سرحدی نے جب دیکھا کہ بیٹا ایکٹنگ اور ڈائریکشن کو بطور پروفیشن اپنانا چاہتا ہے تو انہوں نے اسے فلم ڈائریکشن اور ایکٹنگ کے رموز سیکھنے کے لئے یونان بھیج دیا لیکن خیام سرحدی فلم کورس مکمل کرنے کے بعد بھارت جانے کے بجائے پاکستان آ گیا اور باقی زندگی یہیں بسر کر دی ، خیام سرحدی کا تعلق اداکاری کے حقیقت پسندانہ سکول سے تھا ،

اس کی فنی زندگی کا آغاز ریڈیو پاکستان سے ہوا ، اسی دوران اس نے تھیٹر کو بھی جوائن کر لیا اور باقاعدگی سے سٹیج ڈراموں میں حصہ لینے لگا۔خیام کی ایکٹنگ اور ڈائیلاگ ڈلیوری میں حقیقت کا رنگ نمایاں رہتا تھا ، پاکستان ٹیلی ویژن پر خیام کو یاور حیات نے متعارف کروایا ۔ خیام سرحدی نے جن سیریلز میں کام کیا ان میں وارث، ریزہ ریزہ ،من چلے کا سودا ، دہلیز ، لازوال اور سورج کے ساتھ سا تھ کے علاوہ کئی دوسرے سلسلہ وار کھیل شامل ہیں

خیام سرحدی نے پہلی شا دی اداکارہ عطیہ خیام سے کی ، ان سے علیحدگی کے بعد انہوں نے معروف اداکارہ صائقہ کو اپنے عقد میں لیا ، صائقہ میں سے ان کی تین بیٹیاں ہیں ۔خیام سرحدی چھ سال پہلے آج ہی کے دن دل کا دورہ پڑنے سے اس جہان فا نی سے کوچ کر گئے، ان کے ساتھی فنکار اکثر ان کی یادوں کو تازہ کرتے رہتے ہیں.