Cloud Front
SUprem Court

سپریم کورٹ نے خلاف ضابطہ ترقی پانے والے افسران کا سروس ریکارڈ طلب کرلیا

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے سندھ کے دسافسران کے خلاف ضابطہ ترقیوں سے متعلق کیس میں افسران کا سروس ریکارڈ طلب کرتے ہوئے کیس کی سماعت22فروری تک ملتوی کر دی ہے ۔ کیس کی سماعت جسٹس امیر ہانی مسلم کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے کی جبکہ دوران سماعت جسٹس امیر ہانی مسلم نے ریمارکس دیئے ہیں کہ بیس سال پہلے ترقی پانے والے افسران کو واپس بھیجنا بدقسمتی ہوگی۔ عدالتی حکم کے باوجود افسران عہدوں پر ابھی تک برقرار کیوں ہیں۔ افسران چاہیں تو افسران ریٹائرمنٹ لے لیں کیونکہ عدالتی فیصلہ ریٹائر ہونے والوں پر لاگو نہیں۔ جبکہ عدالت عظمیٰ نے گریڈ بیس کے عبدالوہاب ، عبدالرشید حمید اور سید علی کو نوٹس جاری کر دیئے ہیں جبکہ عدلات کی جانب سے گریڈ انیس کے امر قطب دین وحید احمد، مصطفیٰ اعوان اور بخش علی کو نوٹس جاری کرتے ہوئے افسران کا ریکارڈ طلب کر کے کیس کی سماعت 22فروری تک ملتوی کردی ہے۔