Cloud Front

بھارت: آئی ایس آئی کے لئے جاسوسی کے الزام میں گرفتار کبوتر ‘5547 جانباز خان فرار

ہیڈ کانسٹیبل کی جانب سے تجسس کے باعث پنجرہ کھولنے کے نتیجے میں کبوتر کو اڑنے کا موقع ملا، پولیس

نئی دہلی : ہندوستان کی ریاست پنجاب پولیس کی لاپروائی کے باعث سرحد کی مخالف سمت سے بھارت میں ‘دراندازی’ کرنے والا جاسوس کبوتر اڑنے میں کامیاب ہوگیا۔ بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق پنجاب کے ضلعے سری گنگا نگر کے علاقے سری وجے نگر میں ’جاسوس کبوتر‘ زیر حراست تھا۔پولیس نے کئی گھنٹے کی تگ و دو کے بعد کبوتر کو پکڑا تھا، جس کے ساتھ ‘5547 جانباز خان’ کا ٹیگ لگا ہوا تھا جبکہ ساتھ ایک فون نمبر بھی درج تھا۔پولیس کا دعویٰ تھا کہ ہیڈ کانسٹیبل کی جانب سے تجسس کے باعث پنجرہ کھولنے کے نتیجے میں کبوتر کو اڑنے کا موقع ملا۔ایک ہندوستانی اخبار نے رپورٹ کیا کہ انتظامیہ کے مطابق کبوتر کے اڑنے کے فوری الرٹ جاری کردیا گیا۔سرکاری اہلکار اس کبوتر کو دوبارہ پکڑنے میں کامیاب نہ ہو سکے جبکہ انتظامیہ نے تصدیق کی کہ کبوتر واپس ہمسایہ ملک کی جانب اڑنے میں کامیاب رہا۔

واضح رہے کہ یہ پہلا موقع نہیں جب ہندوستان میں کسی پرندے کو شک کی وجہ سے پر ’گرفتار‘ کیا گیا ہو، کئی دہائیوں سے کشیدگی کے دہانے پر کھڑی دو جوہری طاقتوں کی چپقلش کا نشانہ کئی پرندے بن چکے ہیں۔گذشتہ سال اکتوبر میں بھی جاسوسی کے شبہے میں بھارتی پولیس نے مقبوضہ کشمیر سے 150 سے زائد کبوتروں کو ‘حراست’ میں لیا تھا۔جبکہ اکتوبر میں ہی ہندوستانی پولیس کی حراست میں موجود ‘جاسوس’ کبوتر کے پَر کاٹ دیئے جانے کی خبریں بھی سامنے آئی تھیں، ایسا اس لیے کیا گیا تھا کہ تاکہ مشتبہ کبوتر دوبارہ پاکستان نہ جاسکے۔یہ بھی یاد رہے کہ اڑی حملے کے بعد بھارت اور پاکستان میں شروع ہونے والی کشیدہ صورتحال کے دوران بھارتی پولیس نے ریاست پنجاب کے شہر پٹھان کوٹ سے ایک ‘جاسوس’ کبوتر کو پکڑنے کا دعویٰ کیا تھا، جس کے پاس موجود خط میں وزیراعظم نریندر مودی کے لیے ایک پیغام درج تھا۔