Cloud Front
debat

زیرِ گردش قرضوں کا معاملہ ایک بار پھر سنگین ہوگیا

گردشی قرضوں کا حجم700ارب روپے سے تجاوز کرگیا ،اعدادوشمار

کراچی: زیرِ گردش قرضوں کا معاملہ ایک بار پھر سنگین ہوگیا ہے، گردشی قرضوں کا حجم700ارب روپے سے تجاوز کرگیا ہے۔اعداد وشمار کے مطابق رواں سال جنوری کے اختتام پر گردشی قرضوں کا حجم 370 ارب روپے تک جا پہنچا، پاورہولڈنگ کمپنی لمیٹڈ کے ذمہ 335ارب روپے اس کے علاوہ ہیں ۔انڈسٹری ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت نے پاور ہولڈنگ کمپنی کے ذمہ رقم ترسیلی کمپنیوں کی نجکاری کے زریعے ادا کرنی تھی، جو تاحال نہیں ہوسکی، پاور سیکٹر کو دی جانے والی حکومتی سبسڈی میں بھی نمایاں کمی آئی ہے۔دوسری جانب تقسیمی اور ترسیلی نقصانات میں اضافہ گردشی قرضوں میں اضافے کا باعث بن رہا ہے۔سینیٹ کی قائم کمیٹی برائے خزانہ کی ذیلی کمیٹی میں بھی سرکلر ڈیٹ کا معاملہ زیر بحث رہا، کمیٹی نے سرکلر ڈیٹ کی مد میں کی گئی ادائیگیوں کی تفصیلات طلب کی ہیں جبکہ آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی جانب سے بھی سرکلرڈیٹ کی ادائیگیوں پر اعتراضات اٹھائے گئے ہیں