Cloud Front
Imran Khan

عمران خان کا فوری طور پر فاٹا کو کے پی کے میں ضم کرنے کا مطالبہ

ضرب عضب کا فائدہ اٹھانا ہے تو فاٹا اور کے پی کے آپس میں ضم کردیاجائے وگرنہ دہشت گردی واپس آسکتی ہے
نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد ہوجاتا تو ملک میں تھوڑی بہت دہشت گردی بھی نہ ہوتی،
میڈیا سے گفتگو

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے فوری طور پر فاٹا کو کے پی کے میں ضم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ہم نے ضرب عضب کا فائدہ اٹھانا ہے تو فاٹا اور کے پی کے آپس میں ضم کردیاجائے وگرنہ دہشت گردی واپس آسکتی ہے۔اسلام آباد سے لاہور پہنچنے پر ائیرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس مقصد کے لئے فاٹاسے مشاورت کی جائے وہاں کوئی نظام بنایاجائے تاکہ فاٹا کو دیے جانے والا پیسہ کرپشن کی نذر ہونے کی بجائے صحیح سمت پر استعمال ہوسکے۔ انہوں نے لاہور میں ہونے والے بم دھماکے کے شہدا اور زخمی ہونے والے پولیس اہلکاروں اور شہریوں کے اہلخانہ سے اظہارتعزیت کرتے ہوئے کہا کہ پوری پاکستانی قوم بم دھماکہ کے شہداء اور زخمیوں کے اہل خانہ کے ساتھ کھڑی ہے۔

عمران خان نے اپنے چا رتحفظات کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ اگر نیشنل ایکشن پلان پر عمل درامد ہوجاتا تو ملک میں ہونے والی تھوڑی بہت دہشت گردی بھی نہ ہوتی۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے حوالے سے حکومت کو جسٹس قاضی کی رپورٹ پر توجہ دینی چاہیے اور اب بھی وقت ہے کہ حکومت کو اس پر غور کرناچاہیے۔ انہوں نے کہا کہ رینجرز اورفوج پر دہشت گردی ختم کرنے کا کام نہ چھوڑاجائے بلکہ پولیس کو اس مقصد کے لئے تیار کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ کراچی اور پنجاب میں پولیس کا حال سب کے سامنے ہے مسلم لیگ(ن) چھ مرتبہ اپنے اقتدار کی باریاں لے چکے ہیں مسلم لیگ(ن) چھ مرتبہ اپنے اقتدار کی باریاں لے چکے ہیں مزید بھی لے لیں تو کوئی فرق نہیں پڑتا۔ انہوں نے کہا کہ اگر نیشنل ایکشن پلان کے تحت کراچی میں آپرشن ہوسکتا ہے تو پنجاب میں کیوں نہیں ہوسکتا۔

حکمران پنجاب میں کس کو بچارہے ہیں انہوں نے رینجر کے ذریعے پنجاب میں فوری آپریشن کامطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ماضی میں شہبازشریف نے طالبان کو پیغام دیا تھا وہ پنجاب میں کچھ نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ جب نیشنل ایکشن پلان پر تمام سیاسی جماعتوں کا اتفاق رائے موجود ہے توسیاسی رہنماؤں کے دستخط موجودہیں تو اس پرعمل کیوں نہیں کیاجارہا۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ لاہور میں ہونے والا بم دھماکہ بین الاقوامی سازش ہوسکتی ہے جو پیغام اس دھماکے کے ذریعے غیر ملکیوں کو دیا گیا ہے اس سے پی ایس ایل کے غیر ملکی کھلاڑیوں میں خوف پیداہوسکتا ہے۔ میں تو پورا ہی پی ایس ایل پاکستان میں کروانے کے حق میں ہوں۔ عمران خان ائیرپورٹ سے سیدھا گنگارام ہسپتال گئے اس کے علاوہ انہوں نے میوہسپتال کا دورہ کیا اوروہاں زیر علاج زخمیوں کی عیادت کی۔