Cloud Front

مہمند ایجنسی کے پولیٹیکل ہیڈ کوارٹرپرخودکش حملے کی کوشش ناکام

مہمند ایجنسی میں خودکش دھماکا،2 سیکیورٹی اہلکار جاں بحق
سیکیورٹی اہلکار و ں کی جو ابی کا روائی میں دونو ں حملہ آ ور ہلاک
تحصیل غلانئی میں 2 خودکش حملہ آوروں نے پولیٹیکل ایڈمنسٹریشن کی رہائشی کالونی میں داخل ہونے کی کوشش کی، لیویز اہلکا رو ں کے روکنے پر ایک حملہ آور نے خو د کو دھما کے سے اڑا لیا ،پولیٹیکل انتظامیہ
افغانستان سے خود کش بمباروں کی مہمند ایجنسی میں داخلے کی رپورٹس ملی تھیں،آئی ایس پی آر

پشاور: وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے فاٹا کی مہمند ایجنسی میں خودکش حملے کے نتیجے میں 2 سیکیورٹی اہلکار جاں بحق اورمتعدد زخمی ہوگئے۔پولیٹیکل انتظامیہ ذرائع کے مطابق مہمند ایجنسی کی تحصیل غلانئی میں 2 خودکش حملہ آوروں نے پولیٹیکل ایڈمنسٹریشن کی رہائشی کالونی میں داخل ہونے کی کوشش کی۔تاہم لیویز فورس نے حملہ آوروں کو اندر جانے سے روکا، جس پر ایک حملہ آور نے مرکزی گیٹ کے قریب اپنے آپ کو اڑا لیا، جبکہ دوسرے حملہ آور کو سیکیورٹی فورسز نے ہلاک کردیا۔دھماکے کے نتیجے میں 2 سیکیورٹی اہلکار جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے، جنھیں طبی امداد کے لیے ہسپتال منتقل کردیا گیا۔

بعدازاں پاک افواج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا کہ موٹرسائیکل پرآنے والے دوافراد نے پولیٹیکل ہیڈ کوارٹرمیں داخل کی کوشش کی تووہاں تعینات لیویزاہلکاروں نے انہیں روکنے کا حکم دیا جس پرایک نے خود کو وہیں بارودی مواد سے اڑا دیا جب کہ دوسرے نے فائرنگ شروع کردی، جوابی کارروائی میں دوسرا دہشت گرد بھی ہلاک کردیا گیا۔دھماکے کے بعد پولیٹیکل ہیڈ کوارٹرکا مرکزی دروازہ عام افراد کی آمدورفت کے لیے بند کردیا گیا ہے جب کہ علاقے میں سرچ آپریشن جاری ہے۔۔آئی ایس پی آر کے مطابق سیکیورٹی ایجنسیز کو افغانستان سے خود کش بمباروں کی مہمند ایجنسی میں داخلے کی رپورٹس ملی تھیں۔مزید کہا گیا کہ واقعے کے بعد علاقے میں سرچ آپریشن کا آغاز کردیا گیا۔ذرائع کے مطابق اس جگہ کو کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سے علیحدگی اختیار کرنے والے گروپ ‘جماعت الاحرار’ کا گڑھ سمجھا جاتا ہے۔واضح رہے کہ غلنئی ہیڈکوارٹرمیں پولیٹیکل انتظامیہ آفس اوردیگرسرکاری دفاترہیں۔