Cloud Front

باب دوستی کو18 روزہ بندش کے بعد2دن کیلئے کھول دیا گیا

بارڈر پر ویزہ رکھنے والوں کی پیدل آمد و رفت جاری ،تجارتی سرگرمیوں کی بحالی کا فیصلہ نہ ہوسکا
طورخم بارڈر پر امیگریشن اور ایف سی اہلکاروں کی تعداد بڑھا دی گئی،چیک کا نظام مزید سخت
افغانستان کو دو روزہ آمد و رفت بارے آگاہ کردیا،صرف ویزہ رکھنے والے پیدل افراد آجاسکیں گے، ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا

پشاور۔اسلا م آبا د : پاک افغان سرحد باب دوستی 18 روزہ بندش کے بعددو دن کیلئے طورخم کے مقام پرکھول دی گئی ،بارڈر پر ویزہ رکھنے والوں کی پیدل آمد و رفت جاری رہی جبکہ تجارتی سرگرمیوں کیلئے حکومت نے تاحال فیصلہ نہیں کیا۔ تفصیلات کے مطابق پاک افغان کشیدگی اور سہون دھماکے کے بعد 17فروری سے بند ہونے والی پاک افغان سرحد کو پیدل آمدورفت کے لیے کھولا گیا ہے تاہم باب دوستی تجارتی سرگرمیوں کے لیے بدستور بند رہے گا۔باب دوستی صبح 8سے شام5بجے تک پیدل آمد و رفت کے لیے دو روز تک کھلا رہے گا اورسرحد کے دونوں اطراف پھنسے شہری ویزا اور پاسپورٹ دکھا کرسرحد پار آر جاتے رہے جن میں زیادہ تر تعداد بیمار اور بزرگوں سمیت افغان مہاجرین کی تھی ۔

اس حوالے سے ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا نے بتایا کہ افغانستان کو آگاہ کردیا گیا ہے کہ سرحد دو روز کے لئے صرف ویزہ رکھنے والے پیدل افراد کیلئے کھولی گئی ہے اور پاکستان اور افغانستان میں پھنسے سیکڑوں افراد پاسپورٹ اور ویزہ دکھا کراپنے اپنے ملک جا سکیں گے۔خیبرایجنسی میں طورخم بارڈر سے روزانہ 800 گاڑیاں جبکہ چمن بارڈر پر باب دوستی سے ایک ہزار تک مال بردار گاڑیاں سامان لے کر افغانستان سے آتی جاتی ہیں جبکہ پاک افغان سرحد پر افغان ٹرانزٹ ٹریڈ سمیت نیٹو کنٹینرز بدستور حکومتی اجازت کے منتظر ہیں اور تاحال اس حوالے سے حکومت نے کوئی فیصلہ نہیں کیا جبکہ پاک افغان سرحد پر امیگریشن عملے کو بھی بڑھا دیا گیا ہے جو کہ پاکستان سے افغانستان جانے والے لوگوں کا سختی سے ویزے چیک کرتے رہے ۔ادھر ایف سی اہلکاروں کی تعداد بھی بڑھا دی گئی ہے تاکہ افغانستان سے آنے والے دہشت گردوں کا قلع قمع کیا جاسکے ۔دریں اثناء سرتاج عزیز نے افغان سفیر عمر زخیلوال کو ٹیلیفون پر بتایا کہ 7 اور 8 مارچ کو چمن اور طورخم کے مقامات پر سرحد کھولی جائے گی ۔ دونوں ممالک کے ویزہ رکھنے والے شہریوں کی اپنے اپنے وطن واپسی ممکن ہو سکے گی ۔ دونوں کراسنگ پوائنٹس پر متعلقہ حکام کو بھی بتا دیا گیا ۔