Cloud Front

ایئرپورٹس کی نجکاری کے نام پر 721 ارب روپے کی کرپشن!

لاہور : پاکستان پیپلز پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات چوہدری منظور احمد نے کراچی ،لاہور اور اسلام آباد ایئرپورٹس کی نجکاری کے نام پر 721 ارب روپے کی کرپشن کے میگا سکینڈل کو بے نقاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان ایئرپورٹس کو بیچا نہیں جا رہا بلکہ وزیر اعظم کا خاندان خود خرید رہا ہے ۔گذشتہ روز پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکرٹریٹ میں پارٹی رہنما چوہدری شوکت بسرا کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے حکومت کی چار سالہ کارکردگی اور کرپشن کے میگا سکینڈل پر وائٹ پیپر تیار کرنے کی منظوری دی ہے ،پیپلز پارٹی ہر ہفتے اس سلسلے میں ایک بڑے میگا سکینڈل کو بے نقاب کرے گی اور پھر ان تمام سکینڈلز کو وائٹ پیپر ز کی شکل میں شائع کیاجائے گا ۔پریس کانفرنس کے دوران چوہدری منظور احمد نے کہا کہ خریدار کمپنیوں کے پیچھے وزیر اعظم خود چھپے ہوئے ہیں ،تینوں ٹینڈر سابق چیئرمین ہوا بازی اتھارٹی شجاعت عظیم کو دے دیے گئے ہیں ۔

چوہدری منظور احمد نے کہاکہہ 74 ارب روپے سالانہ کمانے والی سول ایوی ایشن کی نجکاری کا ہرگز کوئی جواز نہیں جبکہ تینوں ایئرپورٹس کی اراضی کی قیمت 4 ہزار ارب سے بھی زیادہ ہے ۔وزیر اعظم اس انڈے دینے والی مرغی کو ذبح نہیں کر رہے بلکہ اپنے گھر لے جا رہے ہیں ۔کراچی ایئرپورٹ کی اراضی 31 ہزار 144 ایکڑ ہے ،لاہور ایئرپورٹ کی اراضی13 سو 65ایکڑ اور اسلام آباد ایئرپورٹ کی اراضی 35 سو 71ایکڑ ہے ۔انہوں نے کہاکہ سول ایوی ایشن کے ملازمین نے جو احتجاج کیاہے ،پیپلز پارٹی ان کی مکمل حمایت کرتی ہے ،حکومت نے مزید 36 منافع بخش اداروں کو تیزی سے پرائیویٹائز کرنے کا منصوبہ بنا رکھا ہے جو کہ یہ خود خریدیں گے ،چوہدری منظور احمد نے کہاکہ حیرت کی بات ہے جب لاہور ایرپورٹ کو بیچا جا رہا ہے تو وزیر اعظم نے وہاں 73 ارب روپے کے توسیعی منصوبے کا اعلان کیوں کیا ،کیا وہ قوم کا 73 ارب لگا کر ائر پورٹ کو دلہن کی طرح سجا کر خریدار کمپنیوں کو پیش کرنا چاہتے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی منظوری سے ہم ثبوتوں کے ساتھ ہر ہفتے حکومت کے ایک میگا سکینڈل کو بے نقاب کریں گے ۔انہوں نے اس موقع پر سول ایوی ایشن کے اس میگا کرپشن کیس کی دستاویزات بھی پیش کیں ۔چوہدری منظور احمد نے کہاکہ نئی انتظامی کمپنیوں کو تین مہینے کے بعد ملازمین کو نکالنے کا حق بھی دے دیا گیاہے جو صریحا مزدور دشمنی ہے۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم بنائیں کہ اسلام آباد ایئر پورٹ کا ٹھیکہ ان کے کس رشتے دار کے پاس ہے ،یہ ٹھیکہ 2013 میں 53 ارب روپے کا تھا ،2016 میں 87ارب کا کر دیا گیا اور اب اسے 125ارب روپے تک بڑھا دیا گیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ پیپلز پارٹی اس میگا کرپشن کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں اٹھائے گی جبکہ نیب اور سپریم کورٹ کو کھلا خط لکھاجائیگا ۔