Cloud Front

امریکیوں کو خصوصی مراعات ہم نے نہیں ، بلکہ نائن الیون کے بعد دیں گئیں، حنا ربانی کھر

شمسی ایئر بیس پیپیلز پارٹی حکومت نے امریکیوں سے خالی کرایا لیکن سی آئی اے کا ایجنٹ ہونے کا الزام لگایا جارہا ہے،نجی ٹی وی سے گفتگو

اسلام آباد : سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے کہا ہے کہ شمسی ایئر بیس امریکیوں کے زیر استعمال تھا جو پیپیلز پارٹی کی حکومت نے امریکیوں سے خالی کرایا لیکن پیپلز پارٹی پر سی آئی اے کا ایجنٹ ہونے کا الزام لگایا جارہا ہے ، امریکیوں کو خصوصی مراعات ہم نے نہیں دیں بلکہ نائن الیوں کے بعد دیں گئیں ، سلالہ واقعے کے بعد ہم نے نیٹو سپلائی روکی ، امریکیوں کا پاکستان میں داخل ہو کر کارروائی کرنا پاکستان کے لیے شرمناک ہے تو اسامہ بن لادن کا پاکستان میں آنا ملک کے لیے زیادہ شرمناک ہے۔اتوار کے روز نجی ٹی وی کو انٹر ویو دیتے ہوئے سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر نے کہا کہ مریکیوں کو خصوصی مراعات ہم نے نہیں دیں بلکہ نائن الیوں کے بعد دیں گئیں ،

سلالہ واقعے کے بعد ہم نے نیٹو سپلائی روکی ، ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ ملٹری اسٹبلشمنٹ کے اعتراضات پر منظر عام پر نہیں لائی جا رہی ، امریکیوں کا پاکستان میں داخل ہو کر کارروائی کرنا پاکستان کے لیے شرمناک ہے تو اسامہ بن لادن کا پاکستان میں آنا ملک کے لیے زیادہ شرمناک ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شمسی ایئر بیس امریکیوں کے زیر استعمال تھا جو پیپیلز پارٹی کی حکومت نے امریکیوں سے خالی کرایا لیکن پیپلز پارٹی پر سی آئی اے کا ایجنٹ ہونے کا الزام لگایا جارہا ہے، میرے دور میں سلالہ حملے کے بعد ہم نے نیٹو سپلائی پر پابندی لگائی ، سکیورٹی اسٹبلشمنٹ کی مرضی کے بغیر غیر ملکیوں کو سہولت فراہم نہیں کی جا سکتی ۔ انہوں نے کہا کہ ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ ملٹری اسٹبلشمنٹ کے اعتراض پر منظر عام پر نہیں لائی جا رہی ، اسامہ بن لادن ایبٹ میں مارے گئے تو ہم ہکا بکا رہ گئے ، امریکی ہیلی کاپٹر پاکستان میں داخل ہوئے ، کارروائی کی اور چلے گئے لیکن پاکستانی سکیورٹی اداروں کو اس کا علم نہیں ہوا یہ کیسے ہو سکتا ہے ؟ ایبٹ آباد کمیشن رپورٹ منظر عام پر آنی چاہئیے تاکہ عوام حقائق سے آگاہ ہو سکیں ۔