Cloud Front
nawaaz sharif

شریف خاندان کی جانب سے ذاتی کاروبارکیلئے سرکاری بینک سے قرضے لئے جانے کاانکشاف

قرضوں کے لئے سیاسی اثرورسوخ استعمال کیاگیا،650ملین سے زائدکے قرضے لئے گئے

اسلام آباد : شریف خاندان کی جانب سے ذاتی کاروبارکیلئے سرکاری بینک سے قرضے لئے جانے کاانکشاف ،قرضوں کے لئے سیاسی اثرورسوخ استعمال کیاگیا،650ملین سے زائدکے قرضے لئے گئے ، میڈیا رپورٹ کے مطابق شریف خاندان نے 2016ء میں سرکاری بینک سے رمضان شوگرملزکے لئے 500ملین کاقرض لیا،یہ قرض لینے کے لئے حمزہ شہبازنے بینک کودرخواست دی ،جنہیں شوگرملزکاچیف ایگزیکٹوآفیسرظاہرکیاگیا،قرض کیلئے شہبازشریف اورنصرت شہبازکی ذاتی ضمانت دی گئی ،نصرت وزیراعلیٰ پنجاب کی اہلیہ اورحمزہ ان کابیٹاہے ،قرض لینے کے پہلے سے موجودقرض کی تفصیل نہیں دی گئی اورپراناقرض واپس کئے بغیرہی نیاقرضہ بھی لیاگیا۔یہ بھی انکشاف ہواہے کہ قرض لینے کیلئے بینک کے ڈائریکٹرکے دستخط جعلی ہیں ،جوبینک ریکارڈمیں موجودشناختی کارڈسے مماثلت رکھتے ہیں ،

شریف خاندان نے عبداللہ شوگرملزکیلئے 1162ملین کے قرضے بھی ری شیڈول کرائے ،یہ قرضے بھی دسمبر2016ء میں ری شیڈول کردیئے گئے ،وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کی صاحبزادی رابعہ عمران اوردامادعمران نے علی اینڈکمپنی کے نام سے 150ملین کاقرض بھی سیاسی اثرورسوخ استعمال کرکے لیا،اس گروپ کی دوسری کمپنی کانام نہیں بتایاگیا،اسی گروپ کی ایک کمپنی پہلے بھی قرضے واپس نہ کرنے پرڈیفالٹرہے اوررولزکے مطابق ڈیفالٹ کرنے والی کمپنی کودوبارہ قرض نہیں دیاجاسکتا،میڈیارپورٹس کے مطابق شریف خاندان نے 1994ء میں بھی اس طرح قرضے ری شیڈول کرائے تھے اوربینک اکاؤنٹ میں صرف100روپے ہونے کے باوجودقرضے لئے گئے تھے