Cloud Front
Suprem Court of India

بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر کا فیصلہ عدالت کے باہر حل کیا جائے، بھارتی سپریم کورٹ

معاملہ انتہائی حساس اور جذباتی نوعیت کا ہے ،فریقین مل بیٹھ کر مسئلے کا حل نکالیں ،عدالتی ریمارکس

نئی دہلی : بھارتی سپریم کورٹ نے ایودھیہ میں بابری مسجد کی جگہ رام ٹمپل کی تعمیر کے حوالے سے فیصلہ دینے بارے معذرت کرتے ہوئے فریقین کو ہدایت کی ہے کہ وہ معاملہ عدالت سے باہر حل کریں۔بھارتی میڈیا کے مطابق حکمران جماعت بی جے پی کے رہنما سبرامینیم سوامی نے اپیکس کورٹ میں گزشتہ چھ سال سے زیر التواء رام ٹمپل کیس کی جلد سماعت کے لئے درخواست دائر کی تھی جس پر سپریم کورٹ نے متعلقہ فریقین سے پوچھا کہ کیا وہ اتفاق رائے سے یہاں آئے ہیں ،سپریم کورٹ نے مزید کہا کہ ایودھیہ کا مسئلہ انتہائی حساس اور جذباتی مسئلہ ہے اس کو خوش اسلوبی سے حل کے لئے ضروری ہے کہ تمام فریقین عدالت کے باہر مل بیٹھ کر اس کا حل نکالیں جبکہ عدالت نے سوامی کو یہ بھی ہدایت کی ہے کہ وہ تمام متعلقہ فریقین سے مشاورت کے بعد 31 مارچ کوفیصلہ بارے آگاہ کرے جبکہ عدالت نے مزید کہا کہ تمام فریقین اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے مصالحت کاروں کا انتخاب کر سکتے ہیں جبکہ چیف جسٹس آف انڈیا جے ایس کھیر نے بھی مصالحت کار ی کی پیشکش کی تاہم اس کے لئے ضروری ہے کہ تمام فریقین متفق ہوں