Cloud Front
PCB

معطل کرکٹرز: چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد نے نیا تنازعہ کھڑا کردیا

ایف آئی اے کو معطل کرکٹرزکا صرف موبائل ڈیٹا تصدیق کے لیے بھیجا تھا،تفتیش کے لیے کس نے کہا ؟، چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد نے نیا تنازعہ کھڑا کردیا
فکسنگ کے معاملے کی تحقیقات پی سی بی ٹربیونل کرے گا،وزارت داخلہ یا حکومت نے رابطہ کیا تو بورڈ فیصلہ کرے گا، آئی سی ایل میں نام ڈالنے کا پی سی بی سے کوئی تعلق نہیں ، سبحان احمد

لاہور: اسپاٹ فکسنگ کی تحقیقات پر نیا تنازع کھڑا ہوگیا۔ پی سی بی کے چیف آپریٹنگ آفیسرسبحان احمد کہتے ہیں ایف آئی اے کو معطل کرکٹرزکا صرف موبائل ڈیٹا تصدیق کے لیے بھیجا تھا،تفتیش کے لیے کس نے کہا ؟۔پاکستان سپرلیگ میں اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل پروفاقی تحقیقاتی ادارے ( ایف آئی اے) کی تحقیقات سے متعلق پی سی بی کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد کے بیان سے نیا تنازع کھڑا ہو گیا۔ سبحان احمد کہتے ہیں ایف آئی اے کو فکسنگ کی تحقیقات کا نہیں کہا تھا۔ایف آئی اے نے کارروائی ڈالی تو پاکستان کرکٹ بورڈ پیچھے ہٹ گیا،ایف آئی اے کی تحقیقات کو ازخود نوٹس قرار دے دیا۔ سی او اوسبحان احمد کے مطابق ایف آئی اے کو کھلاڑیوں کے خلاف تحقیقات کا نہیں کہا،پی ایس ایل فکسنگ میں معطل کرکٹرز کا موبائل فون ڈیٹا تصدیق کے لئے بھیجا تھا اس لیے ایف آئی اے کوموبائل فون جمع کرائے۔سبحان احمد نے کہا کہ ایف آئی اے کی جانب سے کھلاڑیوں کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے سے پی سی بی کا کوئی تعلق نہیں۔ فکسنگ کے معاملے کی تحقیقات پی سی بی ٹربیونل کرے گا۔وزارت داخلہ یا حکومت نے رابطہ کیا تو بورڈ فیصلہ کرے گا۔