کرتار پور راہداری کےمنصوبہ پر کام کا آغاز

کرتارپور راہداری کے منصوبہ پر کام کا آغاز کر دیا گیا ہے۔۔
جیسا کہ ہم سب اس بات سے آگاہ ہیں کہ وزیراعظم عمران خان نے آج سے کچھ روز قبل ضلع نارووال میں چار کلو میٹر طویل کرتارپور راہداری کا سنگ بنیاد رکھی تھی۔۔۔

بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ ، وفاقی وزرا، شاہ محمود قریشی اور شفقت محمود، پنجاب کے گورنر چوہدری سرور ، وزیراعلیٰ عثمان بزدار ،پاکستان تحریک انصاف کے رہنماوں نعیم الحق، عثمان ڈار اور دوسرے اعلیٰ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔۔۔

بھارتی وزیر خوراک Harsimrat Kaur Badal وزیر تعمیرات ہردیپ ایس پوری، بھارتی پنجاب کے وزیر بلدیات و سیاحت اور سابق کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو اوربھارتی صحافیوں پر مشتمل وفد نے بڑی تعداد میں سکھ یاتریوں کے ہمراہ تقریب میں شرکت بھی ہوئی تھی اور ایک منصوبے کو تشکیل دیا گیا تھا۔۔۔اب اس کا آغاز حال ہی میں کیا گیا۔۔

اس منصوبے کی تفصیلات کچھ یوں ہیں کہ :
اس منصوبے پر کام شروع ہو گیا ہے جس کے پہلے مرحلے میں دریائے راوی پر آٹھ سو میٹر طویل پل اور اطراف میں دفاعی بند تعمیر کیا جائے گا۔۔۔

اور اس منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کے لئے بھاری مشینری کرتار پور پہنچ چکی ہے۔۔۔

متروکہ وقف بورڈ کے احکام کے مطابق کرتار پور راہداری کی تعمیر کا ٹھیکہ نجی کمپنی کو دیا گیا ہے جس نے اب باقائدہ کام شروع کر دیا ہے ۔۔۔

اور تعمیراتی کا م کے لیے بھاری مشینری کا استعمال کیا جا رہاہے گوردوارہ دربار صاحب سے بھارتی سرحد تک ساڑھے چار کلو میٹر سڑک کی تعمیر کے پہلے مرحلے میں دریائے راوی اور نالہ بئیں پر پل بنانے کے لیے بھاری مشینری سے کھدائی شروع کر دی گئی ہے۔۔۔

اس کے علاوہ باغی ٹی وی کے مطابق دریائے راوی کے بعد برساتی نامہ بئیں پر چھوٹا پل تعمیر کیا جائے گا۔۔

Comments are closed.